ہر سانحہ ترقی کا ایک موقع،عقلمند قومیں آفات سے سبق لیتی ہیں،گورنر پنجاب

 ہر سانحہ ترقی کا ایک موقع،عقلمند قومیں آفات سے سبق لیتی ہیں،گورنر پنجاب

  

لاہور (کرائم رپورٹر)ایمرجنسی سروسزاکیڈمی نے متاثرین زلزلہ2005 سے اظہاریکجہتی کیلئے سانحات سے آگہی کا قومی دن منایا ۔ اس حوالے سے گورنر ہاؤس پنجاب لاہور میں قومی آفات سے آگاہی کے دن کی پروقار تقریب کا انعقاد کیا گیا۔جس میں گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے بطور مہمان خصوصی تقریب میں شرکت کی جبکہ وزیر برائے ڈزاسٹر مینجمنٹ میاں خالد محمود، کمانڈر پاکستان ریسکیو ٹیم ڈاکٹر رضوان نصیر،ریسکیو ہیڈ کوارٹرز اورایمرجنسی سروسز اکیڈمی کے سینئرافسران اوراقوام متحدہ کے انسراگ سرٹیفیکیشن کی حامل جنوبی ایشیا کی پہلی ڈزاسٹررسپانس ٹیم پاکستان ریسکیو ٹیم کے ممبران نے بھی تقریب میں شرکت کی،گورنر پنجاب نے مزیدکہا کہ ہر سانحہ ترقی کا ایک موقع ہے اورعقلمند قومیں آفات سے سبق لیتی ہیں۔ ڈاکٹر رضوان نصیر ڈی جی ریسکیو نے اس زلزلے 2005 کے بعد جنوبی ایشیاء میں اقوام متحدہ کی پہلی انسراگ سرٹیفائیڈ ٹیم بننے کے چیلنج کو قبول کیا اور مجھے پنجاب ایمرجنسی سروس کے قیام سے ہی اس تنظیم سے وابستہ ہونے پر فخر ہے۔چودھری سرور نے کہا کہ جب ریسکیو سروس کامحض ابتدائی مرحلہ تھا تو اسوقت ان سے درخواست کی گئی کہ برطانیہ فائر سروس سے ریسکیو افسران کی تربیت کا انتظام کریں میں نے چیلنج کو قبول کیا اور ملک میں فائر فائر سروس کا جدید نظام قائم کرنے میں اپنا ہرممکن تعاون پیش کیا۔ چودھری سرور نے ریسکیو سروس کی ملک میں ڈیزاسٹر رسپانس کی تیاری پر اظہاراطمینان کیااور پاکستان ریسکیو ٹیم کو اقوام متحدہ سے جنوبی ایشیا کی پہلی ڈزاسٹررسپانس ٹیم بننے پر مبارک باد دی اور کہا کہ یہ ٹیم نہ صرف ریسکیوسروس بلکہ پورے ملک کیلئے قابل فخر ہے۔اس موقع پر وزیر ڈیزاسٹر منیجمنٹ میاں خالد محمود نے ریسکیو 1122 کی خدمات کوسراہتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی سطح کی ایمرجنسی سروس کے قیام کا سہرا اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی، گورنر پنجاب چوہدری سرور اور ڈاکٹر رضوان نصیر کو جاتا ہے۔انہوں نے ایک واقعہ بیان کرتے ہوئے بتایا کہ ان کے ایک دوست بیرون ملک سے آئے اور انہوں نے مجھے کہا کہ میں نے سن رکھا تھا کہ پاکستان کے پاس بین الاقوامی معیار کی ریسکیو سروس ہے انہوں نے ریسکیو سروسز کا مشاہدہ کیا اور اس کی تعریف کی کہ یہ سروس بین الاقوامی معیار کے مطابق ہے۔

گورنر پنجاب

مزید :

صفحہ آخر -