آٹے کی قیمت میں اضافہ حکومتی نااہلی ہے،محمد حسین محنتی

آٹے کی قیمت میں اضافہ حکومتی نااہلی ہے،محمد حسین محنتی

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی سندھ کے امیروسابق ایم این اے محمد حسین محنتی نے سندھ سمیت ملک میں آٹے کے بحران اورقیمت میں اضافہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے حکومتی ناہلی اورغریب عوام کے منہ سے روٹی کا آخری نوالہ بھی چھیننے کے مترادف قراردیا اورمطالبہ کیا ہے حکومت آٹے سمیت روزمرہ کی اشیائے خورونوش کی قیمتوں کو کنٹرول،بحران پیدا اورذخیراندوزاں کے خلاف سخت کاروائی کرکے غریب عوام کو ریلیف دیاجائے۔انہوں نے آج ایک بیان میں کہاکہ ایک زرعی ملک اورہمیشہ سے گندم میں خودکفیل ہونے کے باوجود گذشتہ کچھ عرصے سے ملک بھر میں گندم کی کمی اور آٹے کے بحران،قیمتوں میں ہوشربا اضافہ تشویش ناک اورحکومتی خراب کارکردگی کامظہر ہے۔فلورملز ایسوسی ایشن کی جانب سے ملک میں آٹے کے شدید بحران اور دسمبر تا فروری شدید قلت کی پیشگوئی سے عام آدمی کی پریشانیوں میں مزید اضافہ ہوگیا ہے، حکومتی بدانتظامی اور نااہلی کی وجہ سے گندم کی فی من قیمت میں سیکڑوں روپے اضافہ ہوچکا ہے جس سے عام آدمی کیلئے دوقت کی روٹی کا بندوبست کرنا بھی مشکل ہوگیا ہے۔ آٹا اور چینی ذخیرہ اندوزی میں ملوث بااثر مافیا کیخلاف مؤثر کاروائی کی جاتی تو آج یہ دن نہ دیکھنا پڑتا،موجودہ حکومت کا یہ المیہ ہے کہ وزیراعظم عمران خان مہنگائی کے حوالے سے جس چیز کی قیمت کا بھی نوٹس لیتے ہیں وہ اشیاء مارکیٹ یا گم ہوجاتی ہیں یا ان کی قیمت دوگنی ہوجاتی ہے، وزیراعظم کی واضح ہدایات کے باوجود نہ آٹا سستا ہوا نہ روٹی، پیٹرولیم مصنوعات،گیس، بجلی، ادویات،چینی آٹے کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ اس بات کا کھلا ثبوت ہے کہ یہ حکومت عوام کو ریلیف دینے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے اور ملک معاشی طور پر تباہی کے دہانے پر کھڑا ہے

مزید :

صفحہ آخر -