ملتان،تین محررونائب محررمختلف  تھانوں میں تعینات، خاتون پولیس  آفیسر کا چارج چھوڑنے سے قبل  آرڈر، ایس او پیز کی خلاف ورزی  پر پولیس ملازمین میں تشویش کی لہر

ملتان،تین محررونائب محررمختلف  تھانوں میں تعینات، خاتون پولیس  آفیسر کا ...

  

 ملتان(وقائع نگار)ضلعی پولیس افسران کی جانب سے تبادلوں بارے (بقیہ نمبر16صفحہ6پر)

ضابطہ اخلاق جاری ہونے کے باوجود خاتون پولیس افسر نے چارج چھوڑنے سے قبل   تین محرر و نائب محرر مختلف میں تعینات کر دیئے۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ملتان پولیس کے نئے تعینات ہونے والے ایس ایس پی آپریشنز آصف آمین اعوان نے 6 اکتوبر کو ضلع بھر کے سینئر و جونیئرز  پولیس افیسرز کو ایک مراسلہ جاری کیا تھا۔جس میں انہوں نے پولیس ملازمین کے تبادلوں کے حوالے سے ضابط اخلاق مرتب کیا۔کہ پولیس ملازم ہر ماہ کی 15 اور 30 تاریخ کو تبادلوں کی بابت او ایس آئی برانچ میں تین تھانوں کی آپشن کے ساتھ درخواست جمع کروائیں گے۔جس پر ایس او پیز کو مد نظر رکھتے ہوئے ٹرانسفر کیئے جائیں گے۔مگر ملتان ڈسٹرکٹ میں ایک خاتون پولیس آفیسر جسکا دو روز قبل روالپنڈی تبادلہ ہوگیا ہے۔ گزشتہ روز تین تھانوں میں محرر اور نائب محرر کو تعینات کئے ہیں۔جن میں جہانزیب منصور کو تھانہ الپہ سے نائب محرر تھانہ نیو ملتان۔ہیڈ کانسٹیبل شوکت حسین کو محرر تھانہ سٹی شجاع آباد سے محرر تھانہ نیو ملتان۔جبکہ ہیڈ کانسٹیبل محمد رمضان کو محرر تھانہ نیو ملتان سے پولیس لائن ٹرانسفر کردیا گیا ہے۔اسی طرح مذکورہ خاتون پولیس آفسیر نے ہیڈ کانسٹیبل رانا توفیق کو محرر پولیس لائن اور شاہد ہیڈ کانسٹیبل کو محرر تھانہ شاہ رکن عالم تعینات کرنے کے احکامات جاری کیئے ہیں۔جس پر ضلع بھر کے پولیس ملازمین میں تشویش پائی جاتی ہے۔انہوں نے اعلی حکام سے مذکورہ صورت حال پر فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

تشویش

مزید :

ملتان صفحہ آخر -