قومی خوشحالی سروے میں کرپشن، لوٹ مار کا انکشاف، متاثرین کا احتجاج

  قومی خوشحالی سروے میں کرپشن، لوٹ مار کا انکشاف، متاثرین کا احتجاج

  

 قصبہ گجرات(نامہ نگار)قومی خوشحالی سروے پروگرام میں کرپشن،لوٹ مار کا انکشاف ہوا ہے  یونین کونسل بدھ اور فاضل کارلو کے علاقوں میں ضلعی خوشحالی سروے پروگرام کے ضلعی انچارج خلیل احمد سیہڑ نے اپنے ماسٹر مانیڈ فیلڈ ورکروں کے ذریعے لوٹ مار کا ٹارگٹ دے کر میدان میں اتار دیا ہے۔ٹارگٹ پورا نہ کرنے والے 100 سے زائد فیلڈ ورکرز جن کا تعلق تحصیل جتوئی,علی پور،مظفر گڑھ اور کوٹ ادو سے تھا معاوضہ لئے بغیر مختلف الزامات لگا کر نکال باہر کیا مقامی لوگوں (بقیہ نمبر1صفحہ6پر)

 کے مطابق سپر وائزر شیر علی فیلڈ ورکر جعفر علی عزیز احمد وغیرہ نے ان غریب خواتین کو بھی نہ چھوڑا جن کے پاس کھانے کے لئے کچھ بھی نہ تھا یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ان خواتین کو جو 2ہزار سے 4 ہزار کارڈ بنانے کے لئے دیتی ہیں انکو سروے پروگرام میں شامل کر لیا جاتا ہے جبکہ غریب خواتین کو بری طرح سے نظر انداز کرتیہووے ان گھرانوں کو چھوڑتے ہوئے غریب خواتین کے حقوق پر ڈاکہ ڈالہ جا رہا ہے متاثرہ سکینہ بی بی،زرینی بی بی،فوزیہ،جنت مائی،ریحانہ بی بی،کلثوم ماء،حنا بی بی وغیرہ کے مطابق انہیں سروے ٹیم میں اس لئے شامل نہ کیا گیا کہ انہوں نے مطلوبہ مانگی گئی رقم فراحم نہ کی۔یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ضلعی انچارج خلیل سیہڑ تحصیل انچارج قیصر منجھوٹہ نے یو سی فاضل کارلو کے فیلڈ ورکر سلیم برانی اور محمد آصف کو گذشتہ ہفتے اپنی ٹیم سے اس لیے فارغ کر دیا نہ انہوں نے مقررہ بھتہ وصولی کا ٹارگٹ مکمل نہیں کیا تھا عوامی اور سماجی حلقوں نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ارباب اختیار کو کرپشن میں ملوس افراد کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

احتجاج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -