’آئی ایس آئی جانتی ہے عمران خان کیسی زندگی گزار رہا ہے‘

’آئی ایس آئی جانتی ہے عمران خان کیسی زندگی گزار رہا ہے‘
’آئی ایس آئی جانتی ہے عمران خان کیسی زندگی گزار رہا ہے‘
کیپشن:    سورس:   Twitter

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پیسے بناؤں توسب سے پہلے آئی ایس آئی کو پتا چلے گا، آئی ایس آئی دنیا کی ٹاپ ایجنسی ہے اور جانتی ہے کہ عمران خان کیسی زندگی گزار رہا ہے، جتنےمرضی جلسے کریں، قانون توڑا تو جیل جائیں گے ، یہ لوگ اب وی آئی پی جیل میں نہیں بلکہ اس جیل میں جائیں گے جہاں غریب آدمی جاتا ہے۔

اسلام آباد میں آل پاکستان انصاف لائرز فورم کے زیر اہتمام سیمینار سے خطاب کرتے ہوئےوزیراعظم عمران خان نے کہا کہ حضرت علی ؓکا قول ہے کہ کفر کا نظام چل سکتا ہے لیکن ناانصافی اور ظلم کا نظام نہیں چل سکتا۔عمران خان نے کہا کہ میں نے انتخابات سے پہلے مدینے کی ریاست کا ذکر اس لیے نہیں کرتا تھا کیونکہ یہ نہ سمجھا جائے کہ میں جیت کیلئے یہ بات کررہا ہوں لیکن حکومت میں آنے کے بعد بار بار اس کا ذکر کرتا ہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ وکلا کے اوپر بڑی ذمہ داری ہے کیونکہ مدینہ کی ریاست کی بنیاد قانون پر قائم تھی۔انہوں نے کہا کہ کوئی بھی معاشرہ اس وقت تک دوسروں کا مقابلہ نہیں کرسکتے جب تک قانون پر عمل نہیں ہوتا۔عمران خان نے کہا کہ جے آئی ٹی کی پورے دو سال تحقیق کے بعد عدالت فیصلہ کرتی ہے اور اگلا کہتا ہے مجھے کیوں نکالا اور پاکستان کے سپریم کورٹ کا فیصلہ نہیں مانتا کہتا کہ مجھے کیوں نکالا اور اس فیصلے کو نہیں مانتے اور اس کا خاندان بھی نہیں مانتا کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ ہمارے لیے الگ قانون ہے۔

عمران خان کا کہناتھا کہ حکمران کرپشن کریں توملک ترقی نہیں کرسکتا، تمام بے روزگار سیاستدان اکٹھے ہوگئے ہیں ، بے روز گارسیاستدان قانون کی بالادستی نہیں مانتے ،یہ لوگ چاہتے ہیں کہ کوئی ہمیں ہاتھ نہ لگائے ، یہ چاہتے ہیں کہ چوری کریں لیکن کوئی ہاتھ نہ ڈالے ،میں ان کے دباومیں نہیں آوں گا، لوگ باہر کسی کی چوری بچانے کیلئے نہیں نکلتے ، یہ قیمے والے نان بھی کھلائیں پھربھی لوگ نہیں نکلیں گے ، یہ مل کر 2 سال بھی جلسے کریں ہماراایک جلسہ ان سے زیادہ ہے ۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ہمیں اپنی افواج پر فخر کرنا چاہیے، پاک فوج کی قربانیوں سےآج ہم دہشتگردی سے محفوظ ہیں، مجھے پاکستان کی فوج سے کوئی مسئلہ نہیں ہے، پاک فوج ہر ایجنڈے پر ہمارے ساتھ کھڑی ہے، پاک فوج نے کورونا میں ہماری مدد کی، نواز شریف پاک فوج کو پنجاب پولیس بنانا چاہتا ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ میں پیسے بناؤں توسب سے پہلے آئی ایس آئی کو پتا چلے گا، آئی ایس آئی دنیا کی ٹاپ ایجنسی ہے،آئی ایس آئی جانتی ہےعمران خان کیسی زندگی گزار رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ لوگ فوج ،عدلیہ اور حکومت کو برا بھلا کہتے ہیں، جس دن ان کو این آر او ملا تو ملک تباہ ہوجائے گا، جتنےمرضی جلسے کریں، قانون توڑا تو جیل جائیں گے ، یہ لوگ اب وی آئی پی جیل میں نہیں جائیں گے بلکہ اس جیل میں جائیں گے جہاں غریب آدمی جاتا ہے۔

ان کا کہناتھا کہ خودلندن بیٹھاہواہے اورلوگوں کو کہتاہے باہرنکلو، ان کے ایک ترجمان نے نوازشریف کوآیت اللہ خمینی بنادیا،  آیت اللہ خمینی کی بیرون ملک جائیدادیں نہیں تھیں ،آیت اللہ خمینی کی بیٹی کی بیرون ملک جائیدادیں نہیں تھیں، آیت اللہ خمینی کوبندوق کی نوک پرباہربھیجاگیاتھا اس نے بیماریاں بتا کر منتیں نہیں کی تھیں،  کابینہ کو نوازشریف کی اتنی بیماریاں بتائی گئیں کہ شیریں مزاری تک کی آنکھ میں آنسو آگئے، نوازشریف کرپشن کرکے ملک سے بھاگاہواہے، وہ ایک گھرکی منی ٹریل نہیں دے سکا۔

وزیر اعظم نے طلال چوہدری پر ’تشدد‘ کے واقعے کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ چند دن پہلے میں نے دیکھا کہ ان کا ایک سینئر عہدیدار صبح کے 3 بجے کسی خاتون کے گھر تنظیم سازی کرنے چلا گیااور میں بڑا حیران ہوا کہ اس خاتون کے بھائیوں نے مارا کیوں اس کو؟ پھر میں نے سوچا کہ ان کی پارٹی میں واقعی ایسے لوگ ہیں جو یہ سمجھیں گے کہ وہ ایمانداری سے پیسہ باہر لے کر گیا ہے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -