بھارتی فوجی اہلکار وں کو جان کا خطرہ ،مودی سرکار اور اپنے افسران کا پول کھول دیا ،ویڈیو سامنے آگئی

بھارتی فوجی اہلکار وں کو جان کا خطرہ ،مودی سرکار اور اپنے افسران کا پول کھول ...
بھارتی فوجی اہلکار وں کو جان کا خطرہ ،مودی سرکار اور اپنے افسران کا پول کھول دیا ،ویڈیو سامنے آگئی

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارتی فوجیوں کی اکثر اوقات اپنے افسران کے ناروا سلوک اور مودی سرکار کے غلط رویے کی ویڈیوز سامنے آتی رہتی ہیں ۔اب ایک اور ویڈیو سامنے آئی ہے جس میں بھارتی فوجی اپنی جانوں کو لاحق خطرات سے ڈرے ہوئے ہیں ۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر پر بھارتی پروفیسر اشوک سوین نے ایک ویڈیو شیئر کی جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک بھارتی فوجی اہلکار مودی سرکار اور اپنے افسران کے رویے پر گلہ کر رہا ہے ۔بھارتی فوج کے اہلکار نے گلہ کیا کہ جس گاڑی میں انہیں لے کر جا یا جا رہا ہے وہ محفوظ نہیں ہے ۔اس نے کہا ہماری زندگی کے ساتھ کھیل کھیلا جا رہا ہے ۔اس دوران ساتھ بیٹھے ایک اہلکار نے کہا کہ یہ کمانڈر کا کام ہے کہ وہ افسروں کو آگاہ کرے ۔اس پر گلہ کرنے والے افسر نے کہا کہ اگر کمانڈر اوپر نہیں بتا ئے گا تو ہم اپنی زندگی جان بوجھ کر برباد کر رہے ہیں،کمانڈر نہیں بولے گا ،اسے کیا ضرورت ہے بولنے کی ۔افسر خود محفوظ گاڑی میں پھرتے ہیں اور مرنے والو کو چھانٹ کر اس ٹرک پر بھیج دیا کہ جاؤ جا کر مرو ۔پھر ویڈیو بنانے والے اہلکار نے بتا یا کہ سہولیات بد ترین ہیں ،کباڑہ گاڑی دے رکھی ہے،ہمار اافسر خود بلٹ پروف گاڑی میں جاتا ہے اور ہمیں کباڑہ ٹرک دیا ہوا ہے جو کہ بلٹ پروف بھی نہیں ہے۔اہلکار نے کہا حکومت اگر ڈیوٹی کروا رہی ہے تو ہمیں سہولیات بھی دے ، ہماری زندگی کے ساتھ کھیل رہی ہے ۔

اس ویڈیو کو شیئر کرتے ہوئےپروفیسر اشوک سوین نے کہا کہ کیا مودی حکومت نے پلوامہ سے کوئی سبق سیکھا،جہاں 40 فوجی مارے گئے؟ یہ اب بھی دہشت گردی کے خلاف کارروائیوں کے لئے عام ٹرکوں میں فوجی بھیجتا ہے اور فوجی ناراض ہیں۔ فوجیوں کی ایک حالیہ ویڈیو (ماسک پہنے ہوئے) جس میں بھارتی حکومت اور سینئر افسران کی بے حسی کے بارے میں شکایت کی جارہی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -