"اگر ہم بھی اپنے دور میں یہ کام شروع کر دیتے تو ملک کبھی بھی  ترقی نہ کرتا "

"اگر ہم بھی اپنے دور میں یہ کام شروع کر دیتے تو ملک کبھی بھی  ترقی نہ کرتا "

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور  پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ اگر حکومت کا انتقام ہماری حد تک ہوتا تو ہم بھگت لیتے لیکن یہ حکومت تو عوام سے انتقام لینا شروع ہو گئی ہے، جس شہباز شریف نے اپنے خاندان کے کاروبار کا نقصان کیا وہ آج گرفتار ہے لیکن جس نے اربوں لوٹے اسے کورونا لاک ڈاؤن میں راتوں رات باہر بھکا دیا گیا ، اگر ہم بھی پکڑ دھکڑ اور انتقام میں لگ جاتے تو شاید پھر  ملک ترقی نہ کرتا۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن چیمبر میں پارلیمانی پارٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئےحمزہ شہباز نے کہا کہ اس حکومت نے عوام سے علاج کا حق بھی چھین لیا ہے، جو ڈائیلاسز سرکاری ہسپتالو ں میں دو سے تین ہزار کا ہوتا تھا اب وہ 13ہزار میں ہوتا ہے، ہفتے میں تین دفعہ یہ عمل کرانے والا غریب 40ہزار روپے کہاں سے لائے گا؟پہلے بھی ادویات مہنگی کی گئیں اوراب دوبارہ 250فیصد مہنگی کر دی گئی ہیں، آٹا 100 روپے کلو میں بھی دستیاب نہیں،غریب نے بجلی کے بل اور روٹی کی خاطر دوائی لینی چھور دی ہے۔انہوں نے کہا کہ اپنے خاندان کے کاروبار کا نقصان کر کے چینی پر سبسڈی نہ دینے والا شہباز شریف آج گرفتار ہے اور اربوں روپے لوٹنے والا کورونا لاک ڈاؤن میں راتوں رات لندن بھگا دیا گیا،جب ہماری حکومت تھی تو ہم سوچتے تھے عوام سے وعدے کئے ہیں تو انہیں کیسے پورا کریں گے؟ کسی کے پاس جادوکی چھڑی نہیں تھی لیکن اللہ کا شکر ہے ہم نے اپنے وعدے پورے کئے، ملک سے لوڈ شیڈنگ کے اندھیرے دور ہوئے، ہماری گروتھ 5.8پر تھی لیکن آج معیشت زمین بوس ہو چکی ہے۔

ا نہوں نے کہاکہ احسن اقبال نے ٹھیک کہا ہے کہ اگر ہم بھی پکڑ دھکڑ اور انتقام میں لگ جاتے تو شاید پھر ترقی حاصل نہ کرسکتے، یہ انسان کی اپنی ترجیحات ہوتی ہیں،ہم مشکلات سے گھبرانے والے نہیں انشا اللہ یہ مشکل وقت بھی کٹ جائے گا  لیکن ہم عوام کے حقوق پر سمجھوتہ نہیں کریں گے۔حمزہ شہباز نے کہا کہ کہتے ہیں نواز شریف غدار ہے، کہتے ہیں اشتہار چھاپ دو،یہ وہی نواز شریف ہے جس نے ملک کو ایٹمی قوت بنایا، یہ وہی نواز شریف ہے جس نے موٹر وے بنائی اور ایف 16موٹر وہاں لینڈ کر رہے ہیں، رد الفساد اور ضرب عضب میں اسی فوج کے ساتھ مل کر ملک سے دہشتگردی کا خاتمہ کیا اور کراچی جو کھنڈر بن گیا تھا اس کو امن کا گہوارہ بنایا، جس نے اپنی جان کو ہتھیلی پر رکھا آپ اس کو غدار کہتے ہیں۔ 

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -