سیلاب کی تباہ کاریوںسے نمٹنے کےلئے حکومت بھر پور کام کررہی ہے،صوبائی وزرائ

سیلاب کی تباہ کاریوںسے نمٹنے کےلئے حکومت بھر پور کام کررہی ہے،صوبائی وزرائ

 لاہور(انویسٹی گیشن سیل)پنجاب سول سیکرٹریٹ میں دو صوبائی وزراءسمیت اہم عہدیداروں نے سیلاب کی تباہ کاریوں کے پیش نظر ہنگامی اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ دو ماہ قبل اطلاع موصول ہوئی تھی کہ جہلم چناب اور راوی میں سیلاب کا خطرہ ہے جس سے متعلقہ اضلاع کو قبل از وقت آگاہ کیا تھا۔سیلاب سے متاثرہ لوگوں کو مکمل ریلیف دیا جائے گا جس مد میں 100ملین روپے جاری کئے گئے ہیں ۔آئندہ 24گھنٹوں میں چناب میں پانی کی سطح کم ہو جائے گی۔صوبائی وزیرشجاع خانزادہ نے کہا کہ زیادہ بارشوں کیوجہ سے سیلاب کی اطلاعات پہلے سے موجود تھیں کہ جہلم،چناب اور ستلج میں سیلاب آسکتا ہے۔یکم ستمبر کو الرٹ جاری کی گئی اور 3ستمبر کو وارننگ ضلعی حکومتوں انتظامیہ کو بھیج دی گئی تھیں ۔سیلاب متاثرین کی مدد پر آرمی کا کردار قابل تحسین ہے۔چنیوٹ سے ساڑھے آٹھ لاکھ جبکہ ہیڈ تریموں سے چھ لاکھ کیوسک پانی گزر رہا ہے سب سے زیادہ گوجرانوالہ ڈویژن میں ساڑھے چار لاکھ لوگ متاثر ہوئے ہیں۔وزیرخوراک بلال یٰسین نے کہا کہ فوری ریلیف کےلئے 100ملین کی گرانٹ جاری کی گئی ہے 250کشتیاں اور18ہزار ٹینٹ مختلف اضلاع میں پہنچائے ہیں۔ایک لاکھ پانی کی بوتلیں،ہزار آتے کے تھیلے اور لائف جیکٹس بھی امدادی سامان میں شامل ہے جبکہ سانپوں کے ڈسنے کی دوائی بھی وافر مقدار میں متاثرہ اضلاع میں بھجوائی ہے۔پنجاب حکومت کے ترجمان زعیم قادری نے کہا کہ صوبے بھر میں 190یونین کونسلیں متاثر ہوئی ہیں جہاں ریلیف کےلئے 236موبائل ٹیمیں موجود ہیں 5ہزار5سو58لوگوں کو ویکسین لگائی جا چکی ہے ،259ریلیف کیمپ لگائے گئے ہیں جبکہ وٹیرنری آفیسروں کی بڑی تعداد بھی فیلڈ میں تعینات کی گئی ہے۔سیلاب میں ہلاکتوں پر فی کس 16لاکھ روپے دیئے جا رہے ہیں ایک لاکھ سے زائد گھر معمولی متاثر جبکہ زیادہ متاثر گھروں کی تعداد 3سو سے زیادہ ہیں۔اجلاس میں شریک مزید افسران و نمائندوں نے بتایا کہ صوبے بھر میں اب تک 131ہلاکتیں ہو ئیں جن میں زیادہ بارشوں کیوجہ سے ہوئی ہیں ۔ایک لاکھ 26ہزار6سو 49ایکڑ اراضی متاثر ہوئی ہے۔ مزید بتایا گیا کہ سیلاب کی تباہ کاریوںسے نمٹنے کےلئے حکومت اور سرکاری محکمے بھر پور کام کررہے ہیں تاکہ لوگوں کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دیا جا سکے۔

صوبائی وزرائ

 

مزید : صفحہ آخر