دھرنوں والے ذہن نشین کر لیں نواز شریف سے اسعفیٰ کسی کا باپ بھی نہیں لے سکتا اسفند یار ولی

دھرنوں والے ذہن نشین کر لیں نواز شریف سے اسعفیٰ کسی کا باپ بھی نہیں لے سکتا ...

                                 چارسدہ(اے این این)عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفند یار ولی نے عمران خان اور طاہر القادری کے دھرنوں کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ دھرنوں والے ذہن نشین کر لیں نواز شریف سے استعفیٰ کسی کا باپ بھی لے سکتا،وہ تبدیلی کہاں ہے جس کے لئے لوگوںنے تحریک انصاف کو ووٹ دئیے،پرانے پاکستان نے ہم نے بے گھر افراد کو عزت کے ساتھ آباد کیا،نئے پاکستان میں آئی ڈی پیز کیمپوں میں پڑے ہیں،لوگ بارش میں مر رہے ہیں اور وزیر اعلیٰ اسلام آباد میں ناچ رہا ہے،کوئی شریف آدمی رات کو ٹی وی پر فیملی کے ساتھ دھرنے نہیں دیکھ سکتا،جوان بچیوں کے والدین کو ہی شرم کرنی چاہیے۔ولی باغ چارسدہ میں اے این پی کے ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ میں واضح کردینا چاہتا ہوں کہ کسی نے اٹھارہویں ترمیم کو چھیڑا تو اس کا حشر وہ ہوگا جو اس کے بچے بھی یاد رکھیں گے ۔عجیب کسوٹی ہے ڈیڑھ سال بعد ایک بندے کو دھاندلی کی فکر پڑ گئی ۔اعلان کیا جاتاہے کہ ہم مرکز سے استعفے لے رہے ہیں لیکن صوبائی اسمبلی سے استعفے نہیں لیے۔بلوچستان میں تحریک انصاف کا ایک یونین کونسل کا ممبر بھی نہیں ۔بلوچستان اسمبلی کو کس لیے تحلیل کیا جائے ؟انہوںنے کہاکہ تحریک انصاف جہاں جیتی وہاں دھاندلی نہیں ہوئی ¾جہاں شکست ہوئی وہاں دھاندلی ہوئی ۔لوگوںنے تبدیلی کیلئے ووٹ دیئے ۔لوگوں نے سمجھا کہ تبدیلی آئے گی اور ہمارے تمام مسائل حل ہوجائیں گے ۔آج اس مجمع سے پتہ چلتاہے کہ مایوسی کتنی ہے کیا وہ تبدیلی پاکستان میں آئی ہے یا نہیں ۔انہوں نے کہاکہ ہمارے دور میں بونیر اور سوات سے لاکھوں کی تعداد میں آئی ڈی پیز آئے ۔کس طریقے سے عوام اور حکومت نے آئی ڈی پیز کی خدمت کی ۔پرانے پاکستان میں آئی ڈی پیز کو عزت کے ساتھ گھروں تک پہنچایا ۔اب نیا پاکستان بن گیاہے ، آئی ڈی پیز کیمپوں میں پڑے ہیں ۔ان پر بارشیں برس رہی ہیں ۔وزیراعلیٰ اسلام آباد کے سٹیج پر ناچنے میں مصروف ہیں۔انہوں نے کہاکہ طاہرالقادری بھی کینیڈا سے بھاگ کر یہاں دھرنا دینے آگئے ہیں ۔دھرنوں سے ملکی معیشت کو نقصان پہنچا ۔شام کے بعد دھرنے ٹی وی پر دکھائے جاتے ہیں ۔اپنی بیٹیوں اور بہنوں کے ساتھ بیٹھ کر آدمی ٹی وی پر دھرنے نہیں دیکھ سکتا ۔جو لوگ شام کو جس مقصد کیلئے دھرنوں میں جاتے ہیں وہ ہم سب کو پتہ ہے لیکن میںحیران ہوں ان لوگوں پر جو اپنی جوان بیٹیو ں کو ٹی وی پر ناچتا ہوا دیکھ کر بھی خاموش ہیں۔میں ان والدین سے کہتا ہوں کہ کچھ تو شرم کرو ۔انہوں نے کہاکہ پشاور میں بارش کے باعث بچے فوت ہوئے ۔وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پشاور نہیں آئے بلکہ اسلام آباد میں ناچتے رہے ۔پچھلے تین دنوں سے سیلاب نے پنجاب کی جو حالت بنارکھی ہے وہ سب کے سامنے ہے ۔نیا پاکستان بنانے والے کنٹینر پر بیٹھ کر تماشاکررہے ہیں ۔ وہ کہتے ہیںوطن اور شہر بھاڑ میں جائے لیکن ہم نے نوازشریف سے استعفیٰ لیناہے ۔ عمران خان کہتا ہے میں تب یہاں سے اٹھوں گا جب نوازشریف استعفیٰ نہی دے گا۔ اسفند یار ولی نے کہا کہ میں واضح کردینا چاہتا ہوں کہ نوازشریف سے استعفیٰ کسی کا باپ بھی نہیں لے سکتا ۔نوازشریف حکومت کی ہزار غلطیاں ہیں ۔اگر شروع میں ماڈل ٹاون کی ایف آئی آر درج ہوجاتی تو کیا حرج تھی۔الیکشن کمیشن کے فیصلوں کے خلاف جوڈیشل کمیشن بن جاتا تو اس میں کونسی قباحت تھی ۔سیاست میں فیصلوں کی ٹائمنگ سب سے اہم بات ہوتی ہے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کی پوری پارلیمنٹ ایک طرف کھڑی ہے ۔جب 1973ءکا آئین بن رہا تھا تو اس وقت ذوالفقار علی بھٹو وزیراعظم اور خان عبدالولی خان اپوزیشن لیڈر تھے ۔73ءکے آئین پر عبدالولی خان کے دستخط ہیں ¾جب تک دستخط وہاں موجود ہیں ہم آئین کی لڑائی لڑتے رہیں گے۔ہم آئین اورجمہوریت کیلئے لڑ رہے ہیں۔

اسفند یار ولی

 

مزید : صفحہ آخر