سیلاب کمیشن کی سفارشات پر عملدرآمد ہوتا توآج نقصان نہ ہوتا،محمود الرشید

سیلاب کمیشن کی سفارشات پر عملدرآمد ہوتا توآج نقصان نہ ہوتا،محمود الرشید

لاہور( نمائندہ خصوصی ) تحریک انصاف کی کور کمیٹی کے ممبر و قائد حزب اختلاف پنجاب میاں محمود الرشید نے کہا ہے کہ تحریک انصاف پنجاب متاثرین سیلاب کی ہر ممکن مدد کرے گی،فنڈز ریزنگ کیلئے اپنی مدد آپ کے تحت کمیٹیاں قائم کر دی گئی ہیں،انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب ساڑھے تین سال قبل 2010 میں جنوبی پنجاب میں سیلاب سے ہونیوالی تباہی پر بننے والے جسٹس منصور علی شاہ کمیشن کی سفارشات پر عملدرآمد کرتے تو آج قیمتی جانی و مالی نقصانات سے بچا جا سکتا تھا،انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے 3سوالات کا جواب مانگتے ہوئے کہا کہ بتایا جائے (1)جسٹس منصور علی شاہ کمیشن کی رپورٹ پبلک کیوں نہیں کی گئی ؟ ( 2)سفارشات میں جن افراد کو نام لے کر تباہی کا ذمہ دار ٹھہرایا گیا تھا ان کے خلاف کیا کارروائی کی گئی ؟ ( 3)کمیشن نے جو سفارشات دی تھیں ان پر کس حد تک عمل ہوا؟ انہوں نے کہا کہ جوڈیشل کمیشن قائم کرنے میں شیر حکمران کمیشنز کی رپورٹس آنے پر گیڈر بن جاتے ہیں ،گزشتہ روز انہوں نے اپنے پبلک سیکرٹریٹ میں اخبار نویسوں اور پارٹی عہدیداروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ متاثرین کی خوراک، ادویات اور بحالی کے نام پر روزانہ قومی خزانے سے کروڑوں روپے ریلیز ہو رہے ہیں مگر الیکٹرونک میڈیا کی ویڈیو ز اور پرنٹ میڈیا کی رپورٹس گواہ ہیں کہ متاثرین کی مدد نہیں ہو رہی ،انہوں نے افواج پاکستان کے جوانوں کو جان ہتھیلی پر رکھ کر ریلیف سرگرمیاں جاری رکھنے پر زبردست خراج تحسین پیش کیا، انہوں نے کہا کہ حکمران عوام کے خون پیسنے کے ٹیکسوں پر چلنے والے پارلیمنٹ کے بے مقصد مشترکہ اجلاس کو ختم کر کے یہ پیسہ متاثرین سیلاب کی مدد اور بحالی کیلئے خرچ کریں۔

مزید : علاقائی