پاک چین اقتصادی راہداری کی تعمیر روکنے کے لیے دشمن قوتوں کا گٹھ جوڑ

پاک چین اقتصادی راہداری کی تعمیر روکنے کے لیے دشمن قوتوں کا گٹھ جوڑ

  

کراچی :تجزیہ مبشر میر

پاک چین اقتصادی راہداری کی تعمیر کو روکنے کے لیے بھارت کو پاکستان دشمن قوتوں کی خفیہ حمایت دکھائی دیتی ہے ۔یہ بات انتہائی حیران کن ہے کہ برطانوی اور امریکی میڈیا دونوں ایٹمی قوتوں کے درمیان جنگ کو خارج از امکان نہیں سمجھتا ۔بھارت کا لائن آف کنٹرول آزاد کشمیر پر آئے دن بلااشتعال فائرنگ کا مقصد پاکستان کو جنگ پر اکسانا ہے ۔بھارت چاہتا ہے کہ پاکستان کی طرف سرحدی خلاف ورزی ہو اور وہ اسی بہانے کی بنیاد پر جنگ شروع کرسکے ۔پاکستان میں دہشت گردوں کے خلاف کامیابیاں دشمن قوتوں کے لیے پریشانی کا باعث ہیں ۔ان کا خیال ہے کہ اگر پاکستان نے مکمل کامیابی حاصل کرلی تو ان کی سازش مکمل ناکامی سے دوچار ہوجائے گی ۔یہی وجہ ہے کہ افواج پاکستان جلد از جلد اندرون ملک دشمنوں کا مکمل خاتمہ کردینا چاہتی ہیں ۔باخبر ذرائع اس بات کا اشارہ دے رہے ہیں کہ اس سال کے آخر تک پورے ملک میں بڑے پیمانے پر ملک دشمنوں کے خلاف آپریشن مکمل کرلیے جائیں گے ۔دفاعی تجزیہ نگاروں کی رائے ہے کہ بھارت مختصر مدت کی جنگ کی خواہش ضرور رکھتا ہے لیکن اسے یہ خدشہ ہے کہ جواباً مکمل جنگ بھی شروع ہوسکتی ہے اور چین کی افواج بھی اس جنگ سے لاتعلق نہیں رہیں گی ۔یہی وجہ ہے کہ وہ کسی بڑی کارروائی سے گھبراتا ہے ۔پاک چین اقتصادی راہداری کی حفاظت مکمل طور پر افواج پاکستان کے پاس ہے ۔یہ بات باعث دلچسپی ہے کہ جرمنی نے برلن سے بغداد تک ریلوے اقتصادی راہداری بنانے کا اعلان کیا تھا تو پورا مغرب ان کے خلاف ہوگیا تھا اور پہلی جنگ عظیم کا آغاز ہوا تھا ۔اس لحاظ سے پاک چین اقتصادی راہداری بہت اہمیت کی حامل ہے ۔پوری دنیا یہ سمجھتی ہے کہ اس کی تکمیل سے پاکستان ایک اقتصادی طاقت بن کر ابھرے گا اور خودانحصاری کا سفر تیزی سے طے کرے گا ۔اگر کوئی ملک فوجی طاقت کے ساتھ اقتصادی طاقت بھی بن جائے تو اسے ’’حقیقی طاقت‘‘ تسلیم کرلیا جاتا ہے ۔پاکستان دشمن قوتیں اس میں رکاوٹیں ڈالنے کے لیے سرتوڑ کوششوں میں مصروف ہیں ۔بھارت افغانستان کے راستے بھی سازشوں میں مصروف ہے ۔امریکی جریدے نیوز ویک نے دعویٰ کیا ہے کہ پاک بھارت جنگ کے نتیجے میں امریکہ کی زمینی افواج الگ تھلگ نہیں رہیں گی ۔امریکی جریدے کی یہ رپورٹ درپردہ عزائم کو ظاہر کرتی ہے ۔

مزید :

تجزیہ -