ملک با اختیار خواتین کی موجودگی میں ہی خوشحال ہو گا:ایف پی سی سی آئی

ملک با اختیار خواتین کی موجودگی میں ہی خوشحال ہو گا:ایف پی سی سی آئی

کراچی( اکنامک رپورٹر )ایف پی سی سی آئی کے صدر عبدالرؤف عالم نے کہا ہے کہ خواتین کو با اختیار بنانے سے ہی ملک و قوم کی بنیادیں مستحکم ہو تی ہیں اور آنے والی نسلیں ترقی کرتی ہیں۔خواتین کمزور ہوں تو معاشرہ کمزور جبکہ بااختیار خواتین سے معاشرہ مضبوط بنیادوں پر استور ہوتا ہے۔ مالی طور پر مستحکم خواتین خاندان کی صحت، تعلیم، آمدنی، پیداواراور معاشرہ میں مثبت رجحانات کا سبب بنتی ہیں جبکہ اسکے بغیر غربت میں کمی کے منصوبے دھرے رہتے ہیں۔ ایف پی سی سی آئی کے صدر عبدالرؤف عالم نے یہ بات اسلام آباد ویمن چیمبر کی ایک میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر ویمن چیمبر کی بانی صدر ثمینہ فاضل، ایف پی سی سی آئی کے نائب صدر ظفر بختاوری، چئیرمین کوآرڈینیشن ملک سہیل اور دیگر بھی موجود تھے۔ عبدالرؤف عالم نے کہا کہ حکومت کی خواتین کا معیار زندگی بلند کرنے کی کوششیں لائق تحسین ہیں ۔

مگر انھیں مزید بڑھانے کی ضرورت ہے۔خواتین کو معیشت کے رسمی اور غیر رسمی شعبوں میں یکساں مواقع رینے سے قوم انکی صلاحیتوں سے بھرپور فائدہ اٹھا سکے گی جس سے ملکی ترقی کی رفتار بڑھے گی۔انھوں نے کہا کہ بعض رسومات خواتین کا منظم استحصال کرنے کو کوشش کے سوا کچھ نہیں جنھیں جلد از جلد ختم کیا جائے۔صرف تعلیم یافتہ اور با اختیار خواتین ملک کی ترقی اور اقتصادی بحالی میں فعال کردار ادا کر سکتی ہیں۔جبکہ انھیں محروم رکھنے سے قومی و معاشی مقاصد کا حصول نا ناممکن ہو جاتا ہے ہے۔انھوں نے ویمن چیمبر کی جانب سے نمائشوں کے انعقاد کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ نمائشیں تخلیقی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے، اعتماد سازی، تعلقات وسیع کرنے اور ترقی کا زینہ ہیں ۔

جس میں وفاقی چیمبر بھرپور تعاون کرے گا۔تاجر خواتین کے برانڈز متعارف کرانے سمیت بعض اہم امورپر توجہ نہیں دیتیں جو انکی ترقی میں رکاوٹ ہے۔ پاکستان میں خواتین کو کئی اقتصادی، سیاسی اور سماجی مسائل کا سامنا ہے لیکن وہ اپنی صلاحیتوں کو اس مشکل ماحول میں بھی تسلیم کروا رہی ہیں۔خواتین کی صحت اور تعلیم میں سرمایہ کاری کامیابی کی کلید ہے۔۔#/s#

مزید : کامرس