پیاف فاؤنڈر الائنس کارپوریٹ کلاس کا اجلا س‘ متعدد انڈسٹریل سیکٹرز اور ایسوسی ایشنز کی حمایت

پیاف فاؤنڈر الائنس کارپوریٹ کلاس کا اجلا س‘ متعدد انڈسٹریل سیکٹرز اور ...

لاہور (کامرس رپورٹر)پیاففاؤنڈرالائنس کارپوریٹ کلاس کا اجلا س گزشستہ روزمیاں مصباح الرحمان سابق صدر لاہور چیمبر کی زیر صدارت ہوا۔ اجلاس میں لاہور چیمبر الیکشن 2016-17 کی کے سلسلے میں مختلف انڈسٹریل سیکٹرز کی سرگرمیوں اور حالیہ کارکردگی کو زیر بحث لایا گیا۔اجلاس میں پیاف فاؤنڈ الائنس کے قائدین لاہور چیمبر کے سابقہ صدورمیاں انجم نثار، میاں مصباح، میاں محمد اشرف ، طاہر جاوید ملک، چیئرمین پیاف عرفان اقبال شیخ ، کارپوریٹ کلاس کے امیدواران سمیت الائنس کے متعدد راہنماؤں نے شرکت کی ۔قائدین میاں مصباح اور میاں انجم نثار نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ کوٹ لکھپت انڈسٹریل اسٹیٹ ۔ فیروز پور انڈسٹریل ایریا سندر انڈسٹریل ایریا ،گلبرگ انڈسٹریل ایریا ‘ کتار بند انڈسٹریل اسٹیٹ ۔ رائیونڈ روڈ انڈسٹریل ایریا‘کاہنا کاچھا انڈسٹریل ایریا اور شیخوپورہ انڈسٹریل ایریا قصور ٹینریز مالکان ‘ فارما سیوٹیکل مینو فیکچررز ایسوسی ایشن کے ممبران ‘ ٹیکسٹائل آٹو پارٹس انجنئرنگ سٹیل ری رولنگ ملز ایسوسی ایشن کے ممبران‘ ٹیکسٹائل پروسسنگ اینڈ پرنٹنگ ملز ایسوسی ایشن کے ممبران‘ پلاسٹک مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے ممبران اور فوڈ پروسسنگ ایسوسی ایشن کے ممبران سے الائنس کے کارپوریٹ کلاس امیدواران اور قائدین ملاقاتیں کرکے حمایت کی یقین دہانیاں حاصل کر چکے ہیں ۔ تمام ممبران اپنے اپنے ایریاز میں ایک دوسرے کو تاکید کر رہے ہیں کہ 26ستمبر کے روز پیاف فاؤنڈرز الائنس کے امیدواران کو ووٹ دیں ۔

اس موقع پر پیاف فاؤنڈرز کے قائدین نے کہا کہ ملکی برآمدات میں کمی ،تجارتی خسارہ میں اضافہ ملکی معیشت کیلئے خطرے کی گھنٹی ہے ،مہنگی بجلی ،گیس و دیگر عوامل کے باعث برآمدات میں مسلسل کمی واقع ہورہی ہے ۔

جبکہ درآمدات میں اضافہ ہورہا ہے جس کے باعث تجارتی خسارہ بڑھ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ نئی تجارتی پالیسی میں برآمدات میں اضافہ کیلئے اربوں روپے مختص کیے گئے ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ برآمدات میں اضافہ کیلئے اس رقم کا استعمال کیا جائے۔ میاں انجم نثار نے کہا کہ بار بار کے وعدوں کے باوجود ریفنڈز کی عدم ادائیگی نے برآمدگان کی کمر توڑ دی ہے جس سے ایکسپورٹ سیکٹر متاثر ہورہا ہے ۔اگر ریفنڈز کو اسی طرح روکے رکھا گیا تو تجارتی خسارہ سے ملکی معیشت متاثر ہوگی انہوں نے کہا کہ برآمد کنندگا کے سیلز ریفنڈز کی ادائیگی کے ساتھ ساتھ کئی سال سے رکے ہوئے دیگر ریفنڈز کی جلد ادائیگی کو یقینی بنایا جائے تاکہ ایکسپورٹر دلچسپی سے برآمدات میں اضافہ کیلئے کوششیں کرسکیں۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی