ریونیو افسران پر رشوت اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام، رپورٹ طلب

ریونیو افسران پر رشوت اور اختیارات کے ناجائز استعمال کا الزام، رپورٹ طلب

لاہور(عامر بٹ سے)اختیارات کا ناجائز استعمال ،5لاکھ روپے رشوت وصولی،اربن ایریا میں غیر قانونی نشاندہی اور پلاٹ پر زبردستی قبضہ کروانے کی کوششیں کرنے میں ملوث ریونیو آفیسرز وزیر آباد وقار ناگرہ نت ،پٹواری وزیر آباد شاہد گورایہ ،سابق ریٹائرڈ پٹواری شوگر دین گورایہ کے خلاف درخواست ہونے پر سیکریٹری بورڈآ ف ریونیو پنجاب نے ڈی سی او گوجرانوالہ سے تفصیلی رپورٹ طلب کر لی ،مزید معلوم ہوا ہے کہ تحصیل وزیر آبا د کے پٹوار سرکل میں واقع جناح آباد کالونی کے رہائشی اور ملکیتی زمین کے مالک لیاقت علی بٹ نے بورڈ آ ف ریونیو پنجاب کے سیکریٹری ریونیو کو نائب تحصیلدار وقار ناگرہ نت ،پٹواری شاہد گورایہ اور اس کے باپ جو کہ ریٹائرڈ پٹواری ہے اور اس وقت پٹوار سرکل کے ریکارڈ پر بھی قابض ہے شوگر دین گورایہ کے خلاف درخواست دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ ضلع گوجرانوالہ کی تحصیل وزیر آباد میں تعینات پٹواری شاہد گورایہ نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے کروڑوں روپے کے اثاثے بنا نے کے علاوہ اپنی تعیناتی کے دوران ریونیو ریکارڈ میں ٹمپرنگ ،ردوبدل کرتے ہوئے صاف شفاف ریکارڈ تباہی کے دہانے پر لا کھڑا کیا ہے جو کہ اس وقت کمپیوٹرائزیشن کے عمل میں بڑی رکاوٹ بن چکا ہے،جن میں سر فہرست پٹوار سرکل وزیر آباد ہے ،قابل ذکر بات یہ ہے کہ اسی سرکل میں مذکورہ پٹواری کے والد شوگر دین گورایہ تعینات تھا جس نے اس سرکل کے ریکارڈمیں ردوبدل کیا اور موجودہ پٹواری کی تعیناتی کے بعد بھی پٹوار سرکل کا ریکارڈ غیر قانونی طور پر اپنے استعمال میں رکھتے ہوئے ریکارڈ میں جعلسازی کر رہا ہے ، پٹواری شاہد گورایہ نے رپٹ نمبری 1045کے تحت فرد برائے ملکیت جدی و مالکان برکت بی بی ،غلام فاطمہ بی بی برائے مختار نامہ محمدانور جاری کی جس کی بنیاد پر میں نے 30لاکھ روپے کے عوض محمد انور سے جگہ خرید کی اور رجسٹری بھی تیار کروا لی ہے اوراب فرد بیع جاری کرتے وقت بھی مذکورہ پٹواری نے مجھ سے 5لاکھ روپے رشو ت لی ہے اور اپنے باپ شوگر دین پٹواری ،ریونیو آفیسر وقار ناگرہ نت ہمراہ لینڈ مافیا کے چند افراد کے ساتھ سازبازکرتے ہوئے ،اربن ایریا میں میرے پلاٹ پر قبضہ کروا رہا ہے اورحکم امتناہی کے باوجو غیر قانونی خلاف ضابطہ اور لینڈ ریونیو ایکٹ کا ناجائزاستعال کررہے ہیں اس کے علاوہ مذکورہ پٹواری شاہد گورایہ اور نائب تحصیلدار وقار ناگرہ نت نے اپنی تعیناتی کے دوران زائد از حصہ کے ہزاروں انتقال کا اندراج کیا،جس کے سبب سینکڑوں شہری اپنی زندگی بھر کی جمع پونجی سے محروم ہوئے ۔اپنی تعیناتی کے دوران ہر موضع میں اپنے قریبی رشتہ دار نوکراور دوستوں کے نام پر رقبے خرید کئے ،سینٹرل گورنمنٹ ،صوبائی حکومت ،وقف شدہ،اراضی شاملاٹ،دیہہ اور نزول لینڈ کی زمین کے خسرہ جات تبدیل کرتے ہوئے فرضی مالکان کے ذریعے سرکاری اراضی ،جعلسازی سے ہتھیائی،پرچہ رجسٹری کے مطابق کوئی انتقالات کا اندراج نہ کیا،رجسٹرانتقالات میں جعلی صفحات چسپاں کئے گئے ،اصل انتقال پرت پٹوار تبدیل کی اور پرت سرکار انتقالات بھی ریکارڈ بھی جمع نہ کروائے۔دوسری جانب ریونیو آفیسر وزیر آباد وقار ناگرہ نت نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ وہ قانونی طور پر اتنے وسیع اختیار رکھتا ہے کہ وہ جب چاہے اور جہاں چاہے نشاندہی کر سکتا ہے اس کے لئے لینڈ ریونیو ایکٹ کا لاگو ہونا لازم نہ ہے ،انہوں نے کہا کہ میں اس پلاٹ کی نشاندہی اپنے زرو بازوپر کر رہا ہوں سیکریٹری پنجاب یا سنیئر ممبر بورڈ ریونیو کے پاس ایسا کوئی قانونی اختیار نہ ہے کہ وہ مجھے روک سکیں ،یہ ضروری نہیں کہ نشاندہی کرتے وقت میں دونوں پارٹیوں کو نوٹس کروں ایسا کسی قانون میں نہیں ہے ،ریکارڈ میں ردو بدل کے الزامات بے بنیاد ہیں ،سیکریٹری ریونیو اور ڈی سی او گوجرانوالہ ہر قسم کی انکوائری کے ذریعے اپنا شوق پورا کرسکتے ہیں کسی قسم کا ڈرخوف نہ ہے۔

مزید : صفحہ آخر