ٹاؤنز اور پھاٹا کے درمیان اختیارات کی کشیدگی سے شہری پریشان

ٹاؤنز اور پھاٹا کے درمیان اختیارات کی کشیدگی سے شہری پریشان

ملتان (خبر نگار) ٹاؤنز اور پھاٹا کے درمیان اختیارات کی کشیدگی کے باعث گلگشت ، نیو ملتان اور ممتاز آباد کے شہری دونوں محکموں کے درمیان شٹل کاک بن کر رہ گئے ہیں پھاٹا کی طرف سے این او سی نہ ملنے پر ٹاؤنز میں جمع ہونے والے درجنوں نقشے التوا کا شکار ہیں بتایا گیا ہے کہ پنجاب ہاوسنگ اینڈ ٹاؤن پلاننگ ایجنسی کے زیر انتظام ملتان شہر کی 3بڑی رہائشی کالونیاں گلگشت ، نیو ملتان اور ممتاز آباد میں بے(بقیہ نمبر12صفحہ12پر )

ہنگم تعمیرات میں اضافے اور اکثریتی رہائشی علاقہ کمرشل تعمیرات میں تبدیل ہونے کی شکایت پر سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ ملتان شدید تشویش میں مبتلا تھی اور پچھلے چند سالوں سے مذکورہ رہائشی کالونیوں کا بلڈنگ کنٹرول پھاٹا سے لیکر ٹاؤنز اور ایم ڈی اے کے حوالے کرنے کی افواہیں سرگرم رہیں اور بالاآخر صوبائی حکومت کی آمادگی سے ڈی سی او ملتان نادر چٹھہ نے مذکورہ تینوں رہائشی کالونیوں کا بلڈنگ کنٹرول ان کے متعلقہ ٹاؤن جن میں بوسن ٹاؤن، شاہ رکن عالم ٹاؤن اور موسی پاک ٹاؤن شامل ہیں کے حوالے کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کردی مگر ان کالونیوں میں نقشہ جمع کرواتے وقت پھاٹا کا این او سی بھی لازمی قرار دیا گیا ہے معلوم ہوا ہے کہ نقشہ جمع کرواتے وقت پھاٹا کا این او سی لازمی قرار دے دیا گیا معلوم ہوا ہے کہ پھاٹا کے آفیسران ابھی تک گلگشت، نیو ملتان اور ممتاز آباد کی کالونیوں کا بلڈنگ کنٹرول چھینے جانے پر سخت نالاں ہیں اور انہوں نے شہریوں کو این او سی جاری کرنے کا سلسلہ روک دیا ہے جس سے ان کالونیوں کے درجن نقشے التوا کا شکار ہو گئے ہیں۔

نقشے

مزید : ملتان صفحہ آخر