جہلم میں قتل ہونیوالی برطانوی نژاد سامعہ شاہد کا اپنی سہیلی کو آخری پیغام سامنے آگیا

جہلم میں قتل ہونیوالی برطانوی نژاد سامعہ شاہد کا اپنی سہیلی کو آخری پیغام ...
جہلم میں قتل ہونیوالی برطانوی نژاد سامعہ شاہد کا اپنی سہیلی کو آخری پیغام سامنے آگیا

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہرجہلم میں مبینہ طورپر سابق شوہر کی طرف سے جنسی درندگی کے بعد غیرت کے نام پر قتل کی جانیوالی پاکستانی نژاد برطانوی شہری سامعہ شاہد پاکستان روانگی سے قبل اپنی دوست ’پال‘ کو ایک ٹیکسٹ میسج کیا تھا جس میں کہاکہ ”دعا کریں، میں زندہ واپس آجاﺅں“۔امکان ظاہر کیا جارہاہے کہ خاندان کی مخالفت کے باوجود طلاق لے کرخاتون نے دوسری شادی کی تھی ۔

بھارت نے پاکستانی طیارے بنا کر ملبہ دکھا دیا لیکن ایک ایسی نشانی چھوڑ دی کہ اپنا ہی دنیا بھر میں ڈرامہ بنا دیا، بے وقوفی کی تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں۔

برطانوی اخبار’دی مرر‘ کے مطابق سامعہ شاہد نے 14جولائی کو اسلام آباد روانگی سے ایک روز قبل پال لیلہ کو ایک میسج بھیجا اور لکھاکہ ”دعا کریں کہ میں 21جولائی کو میں زندہ واپس آجاﺅں کیونکہ تم میرے نفسیاتی مریض کزن کو جانتی ہو“۔یہ بھی انکشاف ہوا ہے کہ اپنی بیٹی کو پاکستان بلانے کیلئے ان کے والد نے اپنی بیماری کا بہانہ کیاتھاجبکہ پنجاب پولیس کی ترجمان نبیلہ غضنفر نے بتایاکہ فارنزک ایگزامینیشن میں قتل سے قبل جنسی زیادتی ثابت ہوگئی ۔

رپورٹ کے مطابق بریڈفورڈ کی رہائشی 28سالہ سامعہ جولائی میں اپنے خاندان سے ملنے آئی تھی جہاں اس کی لاش ملی اور ابتدائی طورپر طبی موت ہی قراردیاگیا تاہم سامعہ کے شوہر سید مختار کاظم کی طرف سے غیرت کے نام پر قتل کیے جانے پر موت کی تحقیقات کی گئیں تو قتل کا بھانڈا پھوٹ گیا، بعدازاں مقتولہ کے والد، چچا اور سابق شوہر کو حراست میں لے لیاگیااور میڈیا رپورٹس کے مطابق مقتولہ کے سابق شوہرچوہدری شکیل نے اعتراف جرم بھی کرلیا۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...