قائم علی شاہ کی کرپشن کے خلاف نیب کو خط ارسال ،مراد علی شاہ کی سکیمیں بھی جعلی ،چائے پی اور کرکٹ کھیل کر ڈرامہ کیا جارہا ہے:سابق وزیر اعلیٰ سندھ لیاقت جتوئی

قائم علی شاہ کی کرپشن کے خلاف نیب کو خط ارسال ،مراد علی شاہ کی سکیمیں بھی ...
 قائم علی شاہ کی کرپشن کے خلاف نیب کو خط ارسال ،مراد علی شاہ کی سکیمیں بھی جعلی ،چائے پی اور کرکٹ کھیل کر ڈرامہ کیا جارہا ہے:سابق وزیر اعلیٰ سندھ لیاقت جتوئی

  


کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیراعلیٰ سندھ اور معروف سیاست دان لیاقت علی جتوئی نے اپنے سابقہ ہم منصب اور ’’سائیں سرکار ‘‘ سید قائم علی شاہ کے 8سالہ دور حکومت میں ہونے والی کرپشن کی تحقیقات کے لیے نیب کو خط ارسال کرکے8سال کے دوران کی جانے والی کرپشن پر سندھ کے وزراء ،مشیران ،معاون خصوصی اور افسران کے خلاف کارروائی مطالبہ کر دیا ۔

نجی ٹی وی کے مطابق اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے لیاقت جتوئی کا کہنا تھا کہ ایف آئی اے بھی اپنی ذمہ داری ادا کرتے ہوئے سندھ حکومت کی کرپشن کو بے نقاب کرے،مراد علی شاہ کی بنائی گئی تمام اسکیمیں جعلی ہیں،پیپلزپارٹی کی حکومت نے ہر چیز پر کمیشن مقرر کردیا ہے اور دبئی میں بیٹھ کر قوم کے پیسوں پر عیاشی کی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ مرادعلی شاہ نے شریک چیئرمین کے معتمد خاص کو اربوں روپے جاری کئے ہیں ،مراد علی شاہ پہلے شہنشاہ کی درگاہ میں ڈھائی ارب روپے ماہانہ دیتے تھے اب ماہانہ پانچ ارب روپے دیتے ہیں، مراد علی شاہ کے سلیم باجاری، حاجن شاہ، سکندر راہو پوٹو، فرنٹ مین ہیں جو تمام غیرقانونی کام کرتے ہیں،چائے پی کر اور کرکٹ کھیل کر ڈرامہ کیا جارہا ہے،کیا پڑھے لکھے وزیراعلیٰ پر کرپشن معاف ہے؟

لیاقت جتوئی کا کہنا تھا کہ اگر میری باتیں غلط ثابت ہوجائیں تو سیاست چھوڑ دونگا،میرے الزامات پر جے آئی ٹی تشکیل دی جائے۔انہوں نے کہا کہ میں نے سید قائم علی شاہ کے 8سالہ دور حکومت میں ہونے والی کرپشن کی تحقیقات کے لیے نیب کو خط ارسال کیا ہے،ایف آئی اے بھی اپنی ذمہ داری ادا کرتے ہوئے سندھ حکومت کی کرپشن کو بے نقاب کرے۔

مزید : کراچی