الحمراء ادبی بیٹھک میں روہنگیا مسلمانوں کیساتھ تقریب اظہار یکجہتی

الحمراء ادبی بیٹھک میں روہنگیا مسلمانوں کیساتھ تقریب اظہار یکجہتی
 الحمراء ادبی بیٹھک میں روہنگیا مسلمانوں کیساتھ تقریب اظہار یکجہتی

  



لاہور(فلم رپورٹر)آرٹسٹ ایسوسی ایشن آف پنجاب اورلاہورآرٹس کونسل ،نیشنل کالج آف آرٹس ،لاہورکالج فاروومن،شاکرعلی میوزیم،کالج آرٹ اینڈ ڈیزائن پنجاب یونیورسٹی،لمز،جی سی یونیورسٹی،گورنمنٹ کالج فاروومن گلبرک،کواپراگیلری، زلفی آرٹ گیلری،اعجارآرٹ گیلری،روھستاسIIآرٹ گیلری ،یونیکورن آرٹ گیلری، نیرنگ آرٹ گیلری اورلاہورآرٹ گیلری کے زیراہتمام الحمراء ادبی بیٹھک میں میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کے ساتھ اظہار یک جہتی کے لئے ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ تقریب میں ملک کے نامور آرٹسٹوں میاں اعجاز الحسن، سردار آصف احمد علی، ڈاکٹر مسرت حسن ،غلام مصطفی، شاہد جلال، ملیحہ آغا، راحت نوید مسعود،منورمحی الدین ، ذوالفقار علی زلفی،شہلافاروق، رفعت ڈار، قددس مرزا، محمدجاوید اورمقبول احمد کے علاوہ دیگر اہم ارکان کے ساتھ ساتھ لوگوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

تقریب کے شرکاء نے اظہار خیال کرتے ہوئے روہنگیا کے مسلمانوں پر ہونے والے ظلم، تشدد اور بربریت کی شدید مذمت کی اور اس بات پر غم وغصہ کا اظہار کیا کہ وہاں کے ریاستی اداروں کی سرپرستی میں مسلمان بچے،خواتین،نوجوان،بوڑھوں پر ظلم ڈھایا جارہا ہے۔انھوں نے عالمی تنظیموں سے مطالبہ کیا کہ روہنگیا میں مسلمانوں کی جونسل کشی کی جارہی ہے اس کا سختی سے نوٹس لیا جائے اور اس کے ذمہ داروں کو جلدازجلد کیفرکردار تک پہنچایاجائے،شرکاء نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ روہنگیا میں مسلمانوں کے ساتھ ہونے والا سلوک کسی بھی مذہب،جمہوری معاشرے کے لئے سوالیہ نشان ہے، ان اقدامات سے میانمار کے حکمرانوں کی منافقانہ اور دہری پالیسی واضح ہوگئی ہے ۔اقوام متحدہ اپنے مینڈیٹ کے تحت مظالم رکوانے میں کردار ادا کرئے ،آرٹسٹ ایسوسی ایشن آف پنجاب نے میانمار کی حکمران آنگ سانی سوچی سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ ان گناؤنے اقدامات کورکوائے۔

مزید : کلچر