این اے 120کے ضمنی الیکشن میں پاکستان کے مستقبل کا فیصلہ ہو گا ، عوام ووٹ دے کر سپریم کورٹ کے ججوں کا شکر یہ ادا کریں : عمران خان

این اے 120کے ضمنی الیکشن میں پاکستان کے مستقبل کا فیصلہ ہو گا ، عوام ووٹ دے کر ...

  



لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک،نمائندہ خصوصی،این این آئی) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ میں کمزور طبقے کو پیغام دینے آیا ہوں کہ جب سے پاکستان بنا یہاں طاقتور ہمیشہ جیتے، یہاں کی عدالتوں سے کبھی کمزور عوام کو انصاف ملا نہ ہی پاکستان میں طاقتور کبھی پکڑا گیا تھا لیکن اب ایک طاقتور کا احتساب کرنے پر سپریم کورٹ کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔عمران خان نے کہا کہ 17 ستمبر کو لاہور کے حلقہ این اے 120 میں ہونے والے انتخابات عام نہیں کیونکہ اس کے نتائج سے ہی پاکستان کے مستقبل کا فیصلہ ہونا ہے اور اس الیکشن میں پاکستان کا راستہ بدلے گا۔چیئرمین تحریک انصاف نے حاضرین کو مخاطب کرتے ہوئے آپ ووٹ دے کر سپریم کورٹ کے ججوں کا شکریہ ادا کریں جنہوں نے ملک کے سب سے بڑے اورطاقتور ڈاکو کو نا اہل قرار دیا کیونکہ آپ کا ووٹ ججز صاحبان کو حوصلہ اور طاقت دے گا، عوام نے این اے 120کے ضمنی انتخاب میں ووٹ ڈال کر عدلیہ کو بتانا ہے کہ ہم بڑی دیر سے انتظار کر رہے تھے کہ آپ کب طاقتور کا احتساب کرو گے ۔عمران خان نے کہا کہ شیر کو ووٹ ڈالنے والے کان کھول کر میری بات سن لیں، کیا وہ اس شخص کو ووٹ ڈالیں گے جس کو سپریم کورٹ نے ایک سال مہلت دی لیکن انہوں نے جو جواب دیئے وہ جھوٹ تھے اور اب سوا سال بعد سپریم کورٹ نے فیصلہ دیا ہے تو نواز شریف کہہ رہے ہیں کہ مجھے کیوں نکالا؟ انہوں نے کہا کہ چوری چھپانے کیلئے کرپٹ لوگوں کو بٹھایا جائے تو ملک اور ادارے تباہ ہو جاتے ہیں۔ عمران خان نے کہا کہ جیلوں میں چھوٹے چوروں نے وہ ظلم نہیں کیا جو بڑے ڈاکو نے کیا۔ تمام جیلوں میں بند چوروں کی چوری اورنواز شریف کی ایک چوری کے برابر ہے۔انہوں نے کہا کہ پوری پاکستان کی جیلوں میں جتنے چور بند ہیں ان سب کی چوری اکٹھی کر لی جائے لیکن وہ نواز شریف کے لندن کے ایک فلیٹ سے کم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چھوٹے چو ر ملک کو تباہ نہیں کرتے لیکن جب ایک ملک کا وزیر اعظم چوری کرتا ہے تو وہ ملک کے اداروں کو تباہ کرتا ہے ، پھر آصف علی زرداری بھی بچ جاتا ہے ، وزیر کرپشن کر رہے ہیں او رپیسہ چوری ہو کر باہر جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جو (ن) لیگ کو ووٹ دینے کا سوچ رہے ہیں وہ بار بار سوچیں کہ آپ کے بچوں کا مستقبل کیا ہے کیا آپ نے اپنے بچوں کا مستقبل تباہ کرنے کے لئے ووٹ دینا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں ڈاکٹر یاسمین راشد کو مبارکباد دے رہا ہوں کہ 17ستمبر کو آپ جیتیں گی حالانکہ آپ کا ریاست کے ساتھ مقابلہ ہے ۔ انہوں نے شرکاء کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ جب (ن) لیگ والے ووٹ مانگنے آئیں تو ان سے سوال پوچھنا کہ ا ن کی قیادت نے کون سا کاروبار کیا کہ وہ اربوں پتی بن گئے ہیں ، اسحاق ڈار پچیس سال پہلے سکوٹر پر پھرتا تھا آج اس کے بچے اربوں پتی ہیں ان کے دبئی میں محلات اور ٹاور ہیں ۔ حسن نواز 600کروڑ روپے کے گھر میں رہتا ہے ، مریم بی بی سے پوچھیں کونسا بزنس کیا گیا کہ ایک طالبعلم ارب پتی بن گیا ہے ۔ میں نے 13سال برطانیہ میں کرکٹ کھیلی او ر دنیا کا بہترین آل راؤنڈر تھا لیکن میں نے لندن میں 60لاکھ کا فلیٹ خریدا اور اس کیلئے بھی قرض لینا پڑا ، ان سے سوال پوچھیں ہمیں بھی وہ بزنس اور گر بتا دیں کہ ہم بھی اربوں پتی بن جائیں ، انہیں تو لوگوں کو اربوں پتی بنانے کے لیکچر دینا چاہیے ۔ انہوں نے اس موقع پر خیبر پختوانخواہ اور پنجاب حکومت کی ترقی کا موازنہ کیا اور کہا کہ خیبر پختوانخواہ میں امن ہے جرائم کم ہوئے ہیں دہشتگردی میں کمی آرہی ہے خوشحالی آرہی ہے اور غربت کم ہو رہی ہے ہماری خیبر پختوانخواہ میں پہلی باری تھی لیکن (ن ) لیگ چھ چھ باریاں لے چکی ہے پنجاب کے مقابلے میں خیبر پختوانخواہ میں غربت پانچ گنا کم ہوئی ہے ، ہم پولیس میں تبدیلی لائے ہیں شہباز شریف کی طرح تبدیلی نہیں لائے کہ یونیفارم ہی تبدیل کر دی ۔ (ن) لیگ نے تیس سالوں میں چھ باریاں لی ہیں لیکن ایک ایسا ہسپتال نہیں بنا سکے کہ جہاں بیگم کلثوم نواز کا علاج ہو سکے ۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کوئی کام تو ایماندار ی سے کر لیا کرو آپ نے ہر کام میں دو نمبر ی کرنا ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں الیکشن کمیشن سے کہنا چاہتا ہوں کہ حلقے میں 29ہزار ووٹوں کی تصدیق نہیں ہوئی لہٰذا ہم ان ووٹوں کو تصاویر کے ساتھ دیکھنا چاہتے ہیں اگر ایسانہ ہوا تو آپ پری پول رگنگ کا راستہ کھول رہے ہیں ، ہمیں 2013ء میں پتہ ہی نہیں چلا کہ کیا ہوا لیکن اب پوری قوم آپ کی طرف دیکھ رہی ہے ، قوم اب 2013ء کی طرح کے انتخاب کو قبول نہیں کر یگی ۔

عمران خان

اسلام آباد(اے این این ) تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ برمی مسلمانوں کے قتل عام پر اقوام متحدہ کی غیر فعالیت شرمناک ہے,وقت ہے کہ اقوام متحدہ یا تو واضح مدد کرے یا پھر اپنے منشور سے ہمیشہ کیلئے لاتعلق ہو جائے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق چیرمین تحریک انصاف عمران خان نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کو لکھے خط میں انہوں نے روہنگیا مسلمانوں کی حالت زاراوراقوام متحدہ کے کردار پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی جاری ہے اور اقوام عالم خاموش تماشائی بنی ہوئی ہیں۔انہوں نے لکھا ہے کہ اقوام متحدہ اس مقصد کو پورا کرے جس کے لئے اس کا قیام عمل میں لایا گیا اوروقت آن پہنچا ہے کہ اقوام متحدہ اپنے وجود کا احساس دلائے کیونکہ کسی بھی قوم کی نسل کشی روکنا بطورخاص اقوام متحدہ کی ذمہ داری ہے لیکن اقوام متحدہ کو فرائض کی انجام دہی میں ذلت آمیز ناکامی کا سامنا ہے۔ انہوں نے مزید لکھا کہ یہ وقت ہے کہ اقوام متحدہ یا تو واضح مدد کرے یا پھر اپنے منشور سے ہمیشہ کیلئے لاتعلق ہو جائے۔

عمران خان/خط

مزید : صفحہ اول


loading...