مقدمات میں جھوٹی گواہیاں دینے والے افراد کیخلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ

مقدمات میں جھوٹی گواہیاں دینے والے افراد کیخلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ

  



ملتان (وقائع نگار) سی پی او ملتان چوہدری محمد سلیم نے 2سالوں کے دوران جھوٹے مقدمے درج کرانے والے مدعیان کے بعد مقدمے میں جھوٹی گواہی دینے والے افراد کیخلاف (بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

قانونی کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تفتیشی افسران کو تقریباً 3576گواہان کیخلاف 182کے تحت کارروائی کرتے ہوئے قلندرہ بنا کر چالان عدالت میں جمع کرانے کا حکم دیا گیا ہے۔ واضح رہے سی پی او ملتان چوہدری محمد سلیم نے کچھ روز قبل آئی جی پنجاب کے جاری کردہ احکامات پر عمل کرتے ہوئے سال 2016-17کے دوران جھوٹے مقدمے درج کرنے والے مدعیان کیخلاف 182کے تحت کارروائی کرتے ہوئے قلندرہ بنا کر عدالت چالان بھجوانے کا حکم صادر فرمایا تھا۔ جس پر 16دن کے اندر کام مکمل کرنے کا کہا گیا۔ سی پی او ملتان نے جھوٹے مقدمے درج کرانے والے افراد کیخلاف کارروائی کے بعد اب مقدمے میں جھوٹی گواہی دینے والے تقریباً 3576گواہان کیخلاف کارروائی کا فیصلہ کیا ہے۔ جس کیلئے تفتیشی افسران کو طریقہ کار واضح کردیا گیا ہے۔ 182کے تحت کارروائی کرتے ہوئے قلندہ بنا کر عدالت میں جمع کروائیں گے۔ سی پی او ملتان کا کہنا ہے کہ اس تمام اقدامات مقصد صرف اتنا ہے کہ لوگ جھوٹے مقدمے درج نہ کروائیں ۔ اور نہ لوگ جھوٹے افراد کیلئے جھوٹی گواہی دیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...