روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کیخلاف ملک بھر میں مظاہرے ، او آئی سی کا اجلاس بلانے اور برما کے سفیر کو ملک بدر کرنے کا مطالبہ

روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کیخلاف ملک بھر میں مظاہرے ، او آئی سی کا اجلاس ...

  



لاہور،اسلام آباد،کراچی(ایجوکیشن رپورٹر،این این آئی) روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کیخلاف ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی گئیں ،تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں جماعت اسلامی کیامیر سراج الحق کی قیادت میں ریلی نکالی گئی جس میں روہنگیا کے مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کے لیے کارکنان کی بڑی تعداد نے شرکت کی تاہم اس دوران جب ریلی سرینا چوک پہنچی تو ریلی کے شرکا نے پولیس کی جانب سے خاردار تاریں ہٹانے کی کوشش کی جس پر پولیس نے ریلی میں شریک بعض افراد پر لاٹھی چارج کردیا۔سرینا چوک پر ریلی سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا کہ مسلمانوں کی مدد کرنا اللہ کا حکم ہے، ہم چاہتے ہیں کہ میانمار میں مسلمانوں پر ظلم روکا جائے۔سراج الحق نے کہا کہ ہم نے اپنی پولیس یا املاک کو نقصان نہیں پہنچانا، ہم آج یہاں عالمی ضمیر جگانے کے لیے جمع ہوئے ہیں۔مظاہرین کا عالمی برادری سے روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کا نوٹس لینے کا مطالبہامیر جماعت اسلامی نے برما کے مسئلے پر فوری طور پر او آئی سی کا اجلاس بلانے اور میانمار کے سفیر کو ملک بدرکرنے کا بھی مطالبہ کیا۔راولپنڈی میں تحریک انصاف کی جانب سے برما کے مسلمانوں کے حق میں لیاقت باغ میں مظاہرہ کیا گیا جس میں بچوں کی بھی بڑی تعداد شریک ہوئی۔پلے کارڈز اٹھائے مظاہرین نے مسلمانوں پر ظلم اور ان کے قتل عام پر امت مسلمہ اور اقوام متحدہ سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا جب کہ مظاہرین نے روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کے خلاف برما حکومت کے خلاف نعرے بازی کی اور سفیر کو فوری پاکستان سے نکالنے کا مطالبہ کیا۔کوئٹہ میں جمعیت علمائے اسلام (ف) نے برما کے مسلمانوں پر مظالم کے خلاف مظاہرہ کیا جس میں عالم اسلام اور اقوام متحدہ سے برما میں مسلمانوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا۔کراچی میں پاکستان پیپلزپارٹی کے تحت برما میں مسلمانوں پر ظلم کے خلاف کراچی پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں وقارمہدی، شہلارضا اور نثار کھوڑو سمیت تمام اضلاع سے کارکنان نے شرکت کی۔مظاہرین نے میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کا قتل عام بند کرانے کا مطالبہ کیا اور میانمار حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔اس موقع پر پیپلزپارٹی کے رہنما اور صوبائی وزیر نثار کھوڑو کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ روہنگیا مسلمانوں کا قتل عام بند کرائے اور عالمی برادری مسلمانوں پرمظالم کی روک تھام کے لیے کردار ادا کرے۔شکارپور، ٹنڈوالہیار، شور کوٹ، کوٹ مومن سمیت دیگر علاقوں میں بھی روہنگیا مسلمانوں پر مظالم کے خلاف احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں اور مظاہرے کیے گئے۔آزاد کشمیر میں بھی اس حوالے سے وکلا، سول سوسائٹی اور انجمن تاجران کے نمائندوں نے شرکت کی۔عوامی تحریک کے سربراہ طاہر القادری کی ہدایت پر عوامی تحریک کے زیر اہتمام لاہور ،اسلام آباد ،ملتان،پشاور،کوئٹہ ،خضدار،کراچی،فیصل آباد،لاڑکانہ،سکھر،ڈیرہ اسماعیل خان،مظفر آباد،کوٹلی،بھمبر ،گلگت سمیت اضلاع ،تحصیل اور ٹاؤن کی سطح پر 200شہروں میں روہنگیا مسلمانوں کے حق میں احتجاجی مظاہرے کئے گئے اور مطالبہ کیا گیا کہ برمی فوج اور بدھوؤں کی دہشتگردی بند کروائی جائے اور ہزاروں انسانوں کی جبری ہجرت اور قتل و غارت گری پر عالمی برادری کی خاموشی پر دکھ کا اظہار کیا گیا۔لاہور میں احتجاجی مظاہرے کی قیادت سیکرٹری جنرل عوامی تحریک خرم نواز گنڈا پور نے کی،انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان کے عوام اپنے برمی بھائیوں کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں اور ان پر ہونیوالے ظلم کی مذمت کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عالمی طاقتیں اپنے مفادات کیلئے انسانیت کا خون مت بہائیں اور برمی فوج اور بدھوؤں کی دہشتگردی کا نوٹس لیں۔برما کے مظلوم اور نہتے مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے جمعیت علماء اسلام کے امیر مولانا فضل الرحمن کی اپیل پر8 ۔ستمبر سے ہفتہ احتجاج کا آغاز ہو چکا ہے جو کہ 15 ۔ ستمبر تک جاری رہے گا،آج بعد نماز جمعہ پنجاب کے ضلعی ہیڈ کوارٹرز اور دیگر اہم مقامات پر احتجاجی مظاہرے اور امریکی مردہ باد ریلیاں نکالی گئیں۔برما میں نہتے مسلمانوں کے خلاف فوج اور برمی حکومت کی بربریت،ظلم اور قتل عام کے خلاف جمعیت علماء پاکستان نے جمعتہ المبارک کے دن ملک بھر میں یوم احتجاج منایا اس سلسلے میں ایک بڑا احتجاجی مظاہرہ فردوس مارکیٹ ،مکہ کالونی اور دیگر آبادیوں سے لبرٹی چوک پر منعقد ہوا ۔مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے جمعیت علماء پاکستان کے صدر علامہ قاری محمد زوار بہادر نے کہا ہے کہ روہنگیا میں مسلمانوں کے قتل عام پر عالمی اداروں کی خاموشی افسوسناک ہے افغانستان میں بت توڑ نے پر ملک پر حملہ کردیا گیا لیکن مسلمانوں کے قتل عام پر ان کو سانپ سونگھ گیا ہے ۔

احتجاجی مظاہرے

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)برما کے سفارتخانے کے سامنے مختلف سیاسی جماعتوں کے احتجاج کے باعث سیکورٹی ہائی الرٹ رہی ۔ جمعہ کو مختلف جماعتوں کی جانب سے برما کے سفارتخانے کے سامنے احتجاج کے باعث سیکورٹی ہائی الرٹ رہی ٗ مختلف جماعتوں نے برما کے سفارتخانے کے سامنے احتجاج کا اعلان کررکھا تھا جس کے پیش نظرسفارتخانے کے اطراف پرتشدد مظاہرین سے نمٹنے کیلئے پولیس کے ساڑھے 7 ہزارجوان وافسران تعینات کئے گئے ٗمظاہرین کو ریڈ زون میں داخلے سے روکنے کیلئے پولیس کے علاوہ کنٹینربھی رکھ کرراستے سیل کردیئے گئے ٗ غیرمتعلقہ افراد کوریڈ زون میں جانے کی اجازت نہیں دی گئی اوربکتر بند گاڑیاں ٗآنسو گیس کے شیل اور قیدی گاڑیاں ریڈ زون کے داخلی راستوں پر پہنچا دی گئیں۔

سکیورٹی ہائی الرٹ

مزید : صفحہ اول


loading...