آزاکشمیر یونیورسٹی شعبہ اردوکانفاذاردوفیصلے پر عملدرآمد کرانیکا مطالبہ

آزاکشمیر یونیورسٹی شعبہ اردوکانفاذاردوفیصلے پر عملدرآمد کرانیکا مطالبہ

  



مظفرآباد( بیورورپورٹ )سپریم کورٹ آف پاکستان کے نفاذِ اردو فیصلے کو دو سال مکمل ،آزادکشمیر بھر میں تاسیسی تقریبات کا انعقاد ،آزادجموں وکشمیر یونیورسٹی شعبہ کے اردو کے زیر اہتمام خصوصی نشست کا انعقاد ،عدالتی فیصلہ پر مکمل عمل درآمد نہ ہونے پر سپریم کورٹ سے سو مو ٹو ایکشن لینے کا مطالبہ ،آزادکشمیر کی اعلیٰ عدلیہ سے بھی ریاست میں اپنا آئینی کردار ادا کرنیکا مطالبہ ،یوم دفاع پروگرام میں صدر ریاست ،کور کمانڈر راولپنڈی کو اردو زبان میں تقریر کرنے پر خراج تحسین ،خصوصی نشست سے سربراہ شعبہ اردو ڈاکٹر عبدالکریم ،سعید ارشد ،طاہر آکاش ،محمد صدیق مغل ،طلعت جبین اور افضال عالم سمیت دیگر نے بھی خطاب کیا ،اس موقع پر طلبہ کی ایک کثیر تعداد موجود تھی ،سربراہ شعبہ اردو ڈاکٹر عبدالکریم نے اس موقع پر اردو زبان کے ماضی ،حال اور مستقبل بارے خصوصی مقالہ پیش کیا،مقررین نے کہا کہ اس وقت ملک میں نظریہ اسلام ،زبان اور فوج ہی یکجہتی کی علامت رہ گئی ہیں ،اس لیے حکمران طبقہ ،ججز سمیت ہر طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد کو اپنی پہچان برقراررکھنے کے لیے دو ر رس فیصلے کرنا ہو ں گے۔مقررین نے کہا کہ سپریم کورٹ آف پاکستان نے یہ تسلیم کیا ہے کہ ملک کا اکثریتی طبقہ پرائی زبان نہیں سمجھتا ،یہاں کے عوام کے بنیادی حقوق اور دستور کا تقاضا بھی یہی ہے کہ سامراجی سوچ سے باہر نکلا جائے اور ملک کو طبقاتی تقسیم کے بھنور سے نکالا جائے۔مقررین نے اس موقع پر سابق چیف جسٹس پاکستان جسٹس جواد ایس خواجا کو بھی خراج تحسین پیش کیا ۔آخر میں برما اور کشمیر کے مسلمانوں سمیت شہدائے وطن کے لیے خصوصی دعا کی گئی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...