وفاق برما میں مسلمانوں کی نسل کشی کیخلاف اسلامی سربراہ کانفرنس بلائے: اسد قیصر

وفاق برما میں مسلمانوں کی نسل کشی کیخلاف اسلامی سربراہ کانفرنس بلائے: اسد ...

  



صوابی ( بیورورپورٹ )سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی اسد قیصر نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ برما میں مسلمانوں کے قتل عام،نسل کشی،ظلم و بربریت کی روک تھام کے لئے فوری طور پر اسلامی سربراہی کانفرنس طلب کرنے کے لئے اپنا بھرپور کردار ادا کرے تاکہ دنیا کے مسلم ممالک کے سربراہان صرف برما کے ایجنڈے پر بات کرکے اس ظلم کا تدارک کیا جاسکے۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے موضع کڈی ونڈ میں عالم خان کی صدارت میں ایک بڑے شمولیتی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔جس سے ضلعی سینئر نائب صدر پی ٹی آئی عبدالستار،ڈاکٹر ریاض گل اور جہاد محمد نے بھی خطاب کیا۔اس موقع پر عالم خان ،عبدالمتین،شیر زمان،عمر خان،عالم جان اور دیگر نے اپنے خاندانوں اور ساتھیوں سمیت پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کیا۔سپیکر اسد قیصر نے کہا کہ اس وقت لیبیا ، شام، عراق ، پاکستان اور افغانستان سمیت پوری امت مسلمہ کو مشکل حالات کا سامنا ہے اور روز بروز اس میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔برما حکومت کی جانب سے وہاں کے مسلمانوں پر ظلم وستم ڈھانے کے علاوہ انہیں ذبح اور جلایا بھی جارہا ہے،برما کے مسلمانوں کی نسل کشی انتہائی افسوسناک اور قابل مذمت ہے،افسوس کی بات یہ ہے کہ اس ظلم کے خلاف اقوام متحدہ ،امریکہ اور انسانی حقوق کے علمبرداروں،مہذب ممالک کے علاوہ اسلامی ممالک کی قیادت بھی خاموش ہیں،حالانکہ مسلم ممالک کی قیادت کو چاہئے کہ وہ فوری طور پر اسلامی سربراہی کانفرنس طلب کرکے برما میں انسانیت کی تذلیل انتہائی ظلم اور بربریت کے تدارک کے لئے تمام ممالک موئثر آواز اٹھائیں۔انھوں نے کہا کہ خوشی کی بات ہے کہ پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے پارلیمنٹ کے اجلاس میں برما میں مسلمانوں پر ہونے والے ظلم وستم پر موئثر آواز اٹھائی جبکہ خیبر پختونخوا اسمبلی میں بھی اس سلسلے میں متفقہ قرارداد پیش کی گئی ہے۔اسلامی سربراہی کانفرنس میں اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ برما کے حکمرانوں کے خلاف انسانیت کی تذلیل پر اس کے خلاف کاروائی کرے تاکہ برما کے مظلوم مسلمانوں کو انصاف مل سکے ۔انہوں نے پی ٹی آئی میں شامل ہونے والے کارکنوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ان کے تعاون سے صوبائی اسمبلی کا حلقہ پی کے۔35 بھاری اکثریت سے جیتیں گے۔انہوں نے کہا کہ صوبے کو اجناس میں خود کفیل بنانے کے لئے صوبائی حکومت نے کسانوں کے لئے خصوصی پیکج گرین ہاؤس متعارف کرایا ہے۔کسانوں کے تمباکو سمیت تمام بنیادی مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کریں گے اور اس سلسلے میں پاکستان ٹوبیکو بورڈ اور تمباکو کمپنیوں کو واضح ہدایات جاری کی ہیں کہ وہ ہر صورت میں کسانوں سے تمباکو خریدیں۔کاشتکاروں کے حقوق پر کسی کو سودا بازی کرنے کی اجازت نہیں دیں گے ورنہ پاکستان ٹوبیکو بورڈ اور نہ ہی تمباکو کمپنیاں ہوں گی اگر کاشتکاروں کے ساتھ کسی بھی زیادتی کی شکایت ملی تو میں اس حوالے سے بھرپور قدم اٹھانے سے گریز نہیں کروں گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...