کراچی ،انصار الشریعہ کے دہشتگردوں کا سراغ جیل سے ملا

کراچی ،انصار الشریعہ کے دہشتگردوں کا سراغ جیل سے ملا

  



کراچی (کرائم رپورٹر)قانون نافذ کرنے والے اداروں کو انصارالشریعہ کے مبینہ دہشت گردوں کا سراغ جیل سے ملا، حساس اداروں کو ابتدا معلومات داعش کراچی کے امیر طاہر منہاس نے فراہم کیں، تنظیم کے مفرور دہشت گرد سروش صدیقی کو خواجہ اظہار پر حملے سے پہلے ہی مانیٹر کیا جارہا تھا۔ ذرائع کے مطابق اس تنظیم کے اہم ہرکارے کافی پہلے حساس اداروں کی واچ لسٹ پر آچکے تھے، اس کا سبب مقامی سطح پر گرفتار کیے گئے داعش کے ارکان بنے جو ان افراد کے ساتھ پہلے سے رابطے میں تھے جنہوں نے بعد میں انصار الشریعہ بنائی۔ حساس اداروں کو اس تنظیم سے متعلق پہلا بریک تھرو اس وقت ملا جب وہ سانحہ صفورا کے ملزمان سے تفتیش کے لیے سینٹرل جیل کراچی پہنچے۔ ابتدائی کھرا داعش کراچی کے امیر طاہر منہاس نے فراہم کیا جبکہ عبدالکریم سروش صدیقی بھی طاہر منہاس کی فراہم کردہ معلومات ہی کی وجہ سے حساس اداروں کے راڈار پر آیا، سانحہ صفورا کا ایک اور ملزم اظہر عشرت بھی اسی تفتیش کا حصہ تھا، سانحہ صفورا کے ملزمان نے تنظیم کے گرفتار رکن طلحہ اور مفرور ملزم مزمل کے نام بھی حساس اداروں کو بتائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر