مہمند ایجنسی‘ تحصیلدار کی سیٹ دو ماہ سے خالی‘ عوام کو مشکلات

مہمند ایجنسی‘ تحصیلدار کی سیٹ دو ماہ سے خالی‘ عوام کو مشکلات

  



مہمند ایجنسی (نمائندہ پاکستان) مہمند ایجنسی، بائیزئی سب ڈویژن کے اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ اور تحصیلدار کی سیٹ گزشتہ دو ماہ سے خالی۔ لوگوں کو ڈومیسائل ، شناختی کارڈ اور دیگر شناختی دستاویزات میں سخت مشکلات کا سامنا۔ مختلف تحصیلوں میں کئی پولیٹیکل محروروں کی ریٹائرمنٹ کے باؤجود نئی بھرتی نہیں ہوئی ہے۔ عارضی تعینات کلرگوں سے کام چلایا جارہا ہے۔ بعض سیٹوں پر غیر متعلقہ ملازمین اور جونیئر اہلکار کام کر رہے ہیں۔ خویزئی بائیزئی کے عوامی تنازعات اور دستخطی اپر مہمند سب ڈویژن منتقل کرنے سے کام سست روی کا شکار ۔ عوامی حلقوں کا اعلیٰ حکام سے آفیسرز سمیت دیگر سٹاف کی کمی پوری کرنے کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق مہمند ایجنسی کے پاک افغان سرحدی بائیزئی سب ڈویژن کے اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ اور تحصیلدار بائیزئی کے تبادلے کے دو ماہ بھی مذکورہ سیٹوں پر تعیناتی نہیں ہوئی ہے۔ متبادل کے طور پر بائیزئی سب ڈویژن کے اختیارات بھی اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ اپر مہمند آفس کے حوالے کر دی گئی۔جس پر پہلے سے دفتری معاملات کا کافی بوجھ تھا ۔ بائیزئی سب ڈویژن کے دو تحصیلوں خویزئی اور بائیزئی کے دفتری کاغذات کی دستخطی اور تنازعات منتقل کرنے سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ خویزئی بائیزئی کے سائلین نے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ ان کا دنوں کا کام ہفتوں اور ہفتے کا کام ایک مہینے تک نہیں ہو پا رہا۔ اور آئے روز سینکڑوں روپے خرچ کر کے روزانہ غلنئی آنا پڑتا ہے۔ جبکہ دفاتر میں بھی ان کے ساتھ ترش اور جارحانہ رویہ روا رکھا جا رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق پولیٹیکل انتظامیہ کے مختلف تحصیلوں میں کئی پولیٹیکل محروروں کے ریٹائرمنٹ کے بعد بھی نئی بھرتی نہیں ہوئی ہے۔ بعض دفاتر میں غیر متعلقہ سرکاری ملازمین اور جونیئر سٹاف سے کام چلایا جاتا ہے۔ عوامی حلقوں نے اعلیٰ حکام سے خالی سیٹوں پر تعیناتیوں اور بائیزئی سب ڈویژن کے اے پی اے اور تحصیلدار کی تعیناتی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...