انصارالشریعہ کے خلاف بھرپورآپریشن جاری،دستیاب معلومات شیئر نہیں کر سکتے، ڈی جی رینجرز

انصارالشریعہ کے خلاف بھرپورآپریشن جاری،دستیاب معلومات شیئر نہیں کر سکتے، ...
انصارالشریعہ کے خلاف بھرپورآپریشن جاری،دستیاب معلومات شیئر نہیں کر سکتے، ڈی جی رینجرز

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)ڈی جی رینجرزمیجرجنرل محمد سعیدنے کہا ہے کہ انصارالشریعہ کے خلاف بھرپورآپریشن جاری ہے، آپریشن میں جومعلومات ملی ہے وہ ابھی شیئرنہیں کرسکتے،آپریشن مکمل ہوگاتوپریس کانفرنس میں تفصیلات بتائی جائیں گی،ڈی جی رینجرزکا کہنا تھا کہ رینجرز اوردیگراداروں نے جامعہ کراچی سے طلبا کا کوئی ریکارڈ نہیں مانگا، انصارالشریعہ کی پوری توجہ پولیس پرتھی، دہشتگردوں کاتعلق کسی ایک جامعہ سے نہیں،مختلف تعلیمی اداروں سے ہے، انصارالشریعہ صرف کراچی تک محدود تھی،میجر جنرل محمد سعید کا کہنا تھا کہ انصارالشریعہ میں تمام پڑھے لکھے لوگ تھے، اس گروپ میں 3لڑکے ایسے ہیں جنہوں نے اپلائیڈ فزکس میں ماسٹرز کیا، انصارالشریعہ کی ٹارگٹ کلنگ ٹیم کی شناخت ہوگئی ہے،خواجہ اظہارپرحملے کے دن ایک دہشت گرد مارا گیا تھا،ملزمان حملہ کرنے کیلئے صبح 4 بجے گھرسے نکلے تھے اور جنوری2017 سے تمام اداروں کے ماہرین کا جوائنٹ ورکنگ گروپ کام کررہا ہے،اساتذہ کو غور کرنا چاہئے نوجوان کیوں ایسی سرگرمیوں کی طرف راغب ہورہے ہیں، ڈی جی رینجرزنے کہا کہ ہرملزم کے پانچ سے چھ نام ہیں،عبداللہ ہاشمی کے مختلف نام سامنے آئے ہیں پہلا نام منصور سامنے آیا تھا،انہوں نے کہا کہ انصارالشریعہ کے7 لڑکے کراچی سے ہیں۔میجر جنرل محمد سعید نے والدین سے گزارش ہے کہ اپنے بچوں پر خصوصی نظر رکھیں ۔

مزید : کراچی


loading...