برطانیہ کی سیاست میں بھی ’شیخ رشید‘ آگیا

برطانیہ کی سیاست میں بھی ’شیخ رشید‘ آگیا
برطانیہ کی سیاست میں بھی ’شیخ رشید‘ آگیا

  



برلن (مانیٹرنگ ڈیسک) ہمارے ہاں عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید سیاسی پیش گوئیوں کے حوالے سے خصوصی شہرت رکھتے ہیں۔ موجودہ حکومت کے قائم ہوتے ہی انہوں نے اس کے خاتمے کی تاریخ بتانا شروع کر دی تھی، اور یہ سلسلہ کسی نہ کسی طور آج تک جاری ہے۔ اگرچہ مغربی ممالک میں سیاست کو بیان بازی کی بجائے عملی خدمت کا کام سمجھا جاتا ہے، لیکن اب ادھر بھی ایک صاحب نے حکومت کے خاتمے کی پیش گوئیوں کو بطور مشغلہ اختیار کر لیا ہے۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ اہم سیاستدان برطانوی انڈیپینڈنٹ پارٹی کے سابق رہنما نائجل فراج ہیں، جنہوں نے جرمنی کے دورے کے دوران برطانوی سیاست پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم ٹریزامے کی حکومت کرسمس سے پہلے ہی رخصت ہو جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم ٹریزامے کی اپنی پارٹی میں ان کے خلاف عدم اطمینان پایا جاتا ہے اور اگر انہوں نے اپنی پارٹی کے رہنماﺅں کے تحفظات کو دور کرنے اور اپنا اثر و رسوخ بحال کرنے کی کوشش نہ کی تو کرسمس کے بعد وہ وزیراعظم نہیں ہوں گی۔ نائیجل فراج کو جرمن پارٹی ’اے ایف ڈی‘ کی رہنما بیٹرکس وان سٹرش کی جانب سے خصوصی خطاب کیلئے مدعو کیا گیا تھا۔ بیٹرکس وان سابق جرمن ڈکٹیٹر ہٹلر کے وزیر خزانہ کی نواسی ہیں۔

بڑھکیں مارنے والے بھارتی آرمی چیف کو چینی میڈیا نے ایسا نام دے دیا کہ جان کر پاکستانیوں کی ہنسی نہ رکے گی

نائجل فراج نے برطانوی وزیراعظم کے اقتدار کو لاحق خطرات کی بات کرتے ہوئے مزید کہا ”برطانوی وزراءکے اپنے بیانات میں تضاد ہے اور وہ سب مختلف سمتوں میں جارہے ہیں۔ وزیراعظم ٹریزامے کو اس صورتحال پر جلد قابو پانا ہوگا ورنہ یہ ان کے اقتدار کیلئے بڑا خطرہ ہے اور کرسمس کے بعد وہ حکومت میں نہیں ہوں گی۔“

اس موقع پر انہوں نے جرمن حکمرانوں کو بھی مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ یورپ کے سب سے بڑے، امیر ترین اور اہم ملک کو بریگزٹ کے معاملے میں مزید غوروخوض کی ضرورت ہے جبکہ مستقبل کے یورپ کے متعلق بھی سوچنا چاہیے۔ انہوں نے جرمنی پر زور دیا کہ یہ یورپ کی سب سے بڑی معیشت ہونے کے ناطے بیلجیئم پر زور ڈالے کہ یورپ کے مفادات کو ترجیح دی جائے اور انہیں یہ بھی بتایا جائے کہ برطانیہ کی یورپی یونین سے علیحدگی کی وجہ بھی یہ ہے کہ بیلجئیم کا سلوک یورپی عوام کے ساتھ اچھا نہیں۔

مزید : برطانیہ


loading...