چغل خوروں کے فتنے سے بچنے کا ایسا وظیفہ کہ کوئی آپ کو نقصان نہ پہنچا سکے گا

09 ستمبر 2018 (13:20)

ہر کوئی چغل خوروں کے فتنہ سے بچنا چاہتا ہے کیونکہ ان کی وجہ سے ان کی زندگی اجیرن ہوکر رہ جاتی ہے ۔دفتر میں تو چغل خوری کرنے والوں کی وجہ سے اچھے بھلے شریف انسانوں کی نوکریاں چلی جاتی ہیں ۔ عیب ،چغل خوری کرنا اور طعنے مارنے کو اسلام سخت ناپسند کرتا ہے۔یہ اخلاقی برائی بعد میں کسی بڑی برائی اور جرم کو جنم دیتی ہے،خاندانوں کو تباہ کردیتی ہے۔کسی انسان کو جب طعنے مارے جائیں یا اسکی چغل خوری کی جائے تو وہ اپنا صبر کھو دیتا ہے ،پھر جواب میں کوئی سخت قدم بھی اٹھا لیتا ہے ۔

چغلی ایسی بری بیماری ہے جس سے معاشرہ فساد کی آماجگاہ بن جاتا ہے اسی لئے حضرت حزیفہ رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ میں نے خود رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا ہے کہ ” چغل خور جنت میں داخل نہیں ہوگا“ اس ے نادازہ لگا لیں اور سبق حاصل کرنا چاہئے کہ چغل خوری کتنی بڑی بیماری اور جرم ہے جو خاندانوں کو تباہ کردیتا ہے۔

جو لوگ چغل خوروں کی وجہ سے مصیبتوں میں ہوں اور لوگوں کے شر اور اپنے افسران بالا کی کڑی تنقید اور گالی گلوچ کا سامنا کرتے ہوں انہیں 21 بار سورة الھمزہ روزانہ پڑھنی چاہئے ،چالیس روز بعد کم از کم 7 بار پڑھ لیا کریں ۔ایک تو لوگوں کی نکتہ چینی اور شر سے محفوظ رہیں گے ۔

۔۔

پیر ابو نعمان رضوی سیفی فی سبیل للہ روحانی رہ نمائی کرتے اور دینی علوم کی تدریس کرتے ہیں ۔ان سے اس ای میل پررابطہ کیا جاسکتا ہے۔peerabunauman@gmail.com

مزیدخبریں