کسی غیر متعلقہ شخص کے عمل دخل یا قبضہ گروپ کی خریدو فروخت برداشت نہیں

  کسی غیر متعلقہ شخص کے عمل دخل یا قبضہ گروپ کی خریدو فروخت برداشت نہیں

بٹ خیلہ (بیورورپورٹ) سخاکوٹ کی ساڑھے ہزار جریب شامیلات آراضی میں کسی غیر متعلقہ شخص کی عمل دخل یا قبضہ گروپ کی خریدو فروخت برداشت نہیں کرینگے۔یہ چار قوموں کی مشترکہ جائیداد ہیں۔سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں سخاکوٹ شامیلات آراضی چار بڑے قوموں ملی خیل عزی خیل، شلمان، خٹک اور سہ سدہ میں تقسیم نہیں کی گئی تو عمل در آمد کے لئے پانچ مہینے بعد سپریم کورٹ کے سامنے احتجاج کرینگے۔ غیر متعلقہ شخص کی جانب سے دئیے گئے سٹامپ پیپرز کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔سرکاری طور پر شامیلات کی جانچ پڑتال اور تقسیم میں انتظامیہ کیساتھ مکمل تعاون کرینگے۔ ان خیالات کا اظہار ملی خیل قومی اتحاد کے ایک بڑے اجتماع جو کہ حجرہ ملک عمر باز خان (مرحوم)پلوٹل میں زیر صدارت سابق نائب ناظم حاجی برکت حیات منعقد ہوا کے دوران کیا جس سے ملی خیل قومی اتحاد کے صدر شوکت حیات،حاجی برکت حیات،حق نواز خان، قومی اتحاد کے جنرل سیکرٹری افتخار خان، حاجی لیاقت علی، حاجی زرین خان،آسد خان بدرشی، احسان الرحمان اورسید افضل لالا سمیت دیگر مقررین نے خطاب کیا۔ صدر شوکت حیات اور دیگر مقررین نے کہا کہ سخاکوٹ کی ساڑھے چار ہزار جریب سے زائد شامیلات چار قوموں ملی خیل عزی خیل، شلمان، خٹک اور سہ سدہ کی مشترکہ جائیداد ہے جس میں سپریم کورٹ آف پاکستان کا فیصلہ بھی ہوچکا ہے کہ مذکورہ شامیلات ان چار قوموں میں تقسیم کیا جائے لیکن بد قسمتی سے چند لوگوں نے شامیلات آراضی میں بے جا مداخلت کرکے اس کی خرید و فروخت کی ہے اور لوگوں کو جعلی سٹامپ پیپرز دئیے ہیں۔ مقررین نے کہاکہ ہم کسی صورت حالات خراب نہیں کرنا چاہتے لیکن ہمارے آمن کے اس خواہش کو ہماری کمزوری نہ سمجھا جائے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے فیصلے کی روشنی میں ہزاروں جریب شامیلات کو چار قوموں کے خواہشات کے مطابق تقسیم کیا جائے۔ مقررین نے کہا کہ گلو شاہ سخاکوٹ میں جن جن لوگوں نے شامیلات کی زمینیں خریدنے کا دعویٰ کیا ہے انہیں یہ ثابت کرنا ہوگا کہ یہ زمینیں انہوں نے اصل مالکان سے لئے ہیں یا کسی غیر متعلقہ لوگوں سے؟۔ مقررین نے کہا کہ زور زبردستی اور بد معاشیوں کا دور گزر چکا ہے اس لئے شامیلات کے آراضی پر زبردستی قبضے یا خرید و فروخت کا بھر پور جواب دیا جائیگا اور جس نے بھی حق سے زیادہ زمین قبضہ کی ہے ان سے واپس لیا جائیگا۔ اس موقع پر انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہمارے چار قوموں میں سے جن جن نے شامیلات سے اپنے حق کا حصہ فروخت کیا ہے اس سے زیادہ آراضی نہیں دینگے۔ اس دوران ملی خیل قومی اتحاد کے صدر شوکت حیات خان نے اعلان کیا کہ اپنے کشمیری مسلمان بہن بھائیوں کو مصیبت کے اس گھڑی میں اکیلا نہیں چھوڑیں گے اور کشمیر کے لئے آزادی حکومت پاکستان اور پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں کیونکہ اس سے قبل بھی ہمارے آباؤ اجداد نے کشمیر کے آزادی کے لئے جدوجہد کی ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...