افغانستان نے ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں نیا باب رقم کر دیا

افغانستان نے ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں نیا باب رقم کر دیا
افغانستان نے ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں نیا باب رقم کر دیا

  


چٹا گانگ (ڈیلی پاکستان آن لائن) افغانستان کرکٹ ٹیم نے بنگلہ دیش کیخلاف کھیلے گئے واحد ٹیسٹ میچ میں 224 رنز سے فتح حاصل کر کے ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں نیا باب رقم کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بنگلہ دیش کے خلاف واحد ٹیسٹ میں افغانستان تاریخی فتح سے صرف 4 وکٹ کی دوری پر تھی اور پانچویں روز چاروں کھلاڑیوں کو آﺅٹ کر کے نیا باب رقم کر دیا ہے۔ بنگلہ دیش نے میچ کے پانچویں روز 136 رنز 6 کھلاڑی آﺅٹ سے اننگز کا آغاز کیا تو چار کھلاڑی مجموعی سکور میں صرف 69 رنز کا اضافہ ہی کر سکے اور یوں پوری ٹیم 205 رنز بنا کر آﺅٹ ہو گئی اور افغانستان نے یہ میچ 224 رنز سے جیت لیا۔

قبل ازیں چوتھے روز افغانستان کرکٹ ٹیم نے 398 رنز ہدف کا تعاقب کرنے والی میزبان سائیڈ کو 136 رنز 6 وکٹ تک محدود کردیا، پورے دن بارش کی دخل اندازی بھی جاری رہی جبکہ آخر میں بھی ایک گھنٹہ قبل ہی موسم کی وجہ سے چوتھے روز کا کھیل ختم کرنا پڑا۔ صبح کا سیشن بھی 2 گھنٹے تاخیر سے شروع ہوا جبکہ لنچ بریک کو بھی 40 منٹ تک مزید بڑھانا پڑا۔

مہمان سائیڈ نے اس دوران کھیلنے کیلئے ملنے والی مہلت سے بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے میزبان سائیڈ کی 6 وکٹیں اڑائیں، لیفٹ آرم سپنر ظہیر خان نے لنچ بریک کے فوری بعد 2 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھا دی۔ لٹن داس 9 اور مصدق حسین 12 رنز بناسکے۔ مشفیق الرحیم میچ میں دوسری اور مجموعی طور پر چھٹی مرتبہ راشد خان کی وکٹ بنے، انہوں نے ایل بی ڈبلیو ہونے سے قبل 23 رنز بنائے۔

اگلے اوور میں راشد نے مومن الحق (3) کو بھی ایل بی ڈبلیو کیا جبکہ خاصی دیر تک مزاحمت کرنے والے شادمان اسلام بھی آخر کار 41 رنز بناکر محمد نبی کی گیند پر ایل بی ڈبلیو قرار پائے۔ محمود اللہ کو 7 کے انفرادی سکور پر راشد خان نے اپنا شکار بنایا اور ابراہیم زدران کے ہاتھوں کیچ ہوئے، چوتھے روز کھیل کے اختتام تک بنگلہ دیش نے 6 وکٹ پر 136 رنز بنائے تھے جبکہ اسے فتح کیلئے مزید 262 رنز اور افغانستان کو جیت کیلئے مزید چار وکٹیں درکار ہیں۔

مزید : کھیل


loading...