حکومت نہیں چاہتی نواز شریف کبھی واپس آئیں،خواجہ سعد رفیق

حکومت نہیں چاہتی نواز شریف کبھی واپس آئیں،خواجہ سعد رفیق

  

لاہور(نامہ نگار)سیشن کورٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے ایم این اے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ لوگ اس جبر کے نظام سے تنگ آ چکے ہیں، اپوزیشن نے 20 ستمبر کو اے پی سی کا اعلان کیاہے،پوری قوم کہ نظریں اے پی سی پر ہیں،حکومت نے اپنی سمت درست نہ کی تو آئین و قانون کے تحت اقدامات اٹھائے جائیں گے،اے پی سی کے نتائج حوصلہ افزا ہوں گے،انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم 1100 ارب روپے کے پیکج کا اعلان کر آئیں ہیں جبکہ ان کا سالانہ ترقیاتی بجٹ صرف 600 ارب ہے،صرف اعلان ہی کرنا ہے کون سا عمل درآمد کرنا ہے،یہ سبز باغ ہے جو قوم اور اب کراچی کے عوام کو دکھایا جا رہا ہے،آگر پاکستان کا پارلیمانی ڈھانچہ تبدیل کرنا ہے تو یہاس اسمبلی کا استحقاق ہی نہیں ہے،انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ باتوں سے صدارتی نظام نہیں آئے گا،پارلیمانی نظام کو کبھی چلنے ہی نہیں دیا گیا،حکومت نہیں چاہتی کہ نواز شریف کبھی واپس آئیں،یہ صرف لوگوں کو بے وقوف بنانے کی کوشش کر رہے ہیں،نواز شریف کی میڈیکل رپورٹس موجود ہیں، وہ بیمار ہیں،ملک میں کوئی انصاف نہیں ہے،ہمارے کیس میں کوئی مدعی کا نہیں پتہ لیکن ہم نے جیل بھی کاٹی،انہوں نے مزید کہا کہ نواز شریف کیوں واپس آئیں جب ملک میں پہلے بھی انہیں انصاف نہیں ملا،نواز شریف کو پہلے اپنی صحت پر توجہ دینی چاہیے۔

خواجہ سعد رفیق

مزید :

صفحہ آخر -