آذربائیجان مسئلہ کشمیر پر پاکستانی موقف کی بھر پور حمایت اور ساتھ کھڑا ہے: علی علیز ادہ

آذربائیجان مسئلہ کشمیر پر پاکستانی موقف کی بھر پور حمایت اور ساتھ کھڑا ہے: ...

  

  اسلام آباد (این این آئی)سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ پاکستان آذربائیجان کے ساتھ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کا خواہاں ہے، دونوں ممالک کے درمیان پائیدار سفارتی تعلقات استوار،علاقائی اور بین الاقومی معاملات پر یکساں مؤقف رکھتے ہیں، قومی اسمبلی میں قائم پاک، آذربائیجان پارلیمانی دوستی گروپ پارلیمانی رابطوں میں اضافے کیلئے مناسب فورم ثابت ہو سکتا ہے، مسئلہ کشمیر کا کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق حل خطے میں پائیدار امن کے قیام کیلئے ناگزیر ہے، بھارتی آئین سے آرٹیکلز 370 اور 35الف کی غیر قانونی منسوخی ریاست کے آبادیاتی ڈھانچے کو تبدیل کرنے کی مذموم سازش ہے۔منگل کو سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے آذر بائیجان کے سفیر علی علیزادہ نے ملاقات کی۔اس موقع پر اسد قیصر نے کہا کہ پاکستان اور آذربائیجان کے مابین نا صرف ثقافتی، مذہبی اور جغرافیائی مماثلت ہے بلکہ علاقائی اور بین الاقومی معاملات پر یکساں مؤقف رکھتے ہیں۔دونوں ممالک کے مابین معاشی تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کے وافر مواقع موجود ہیں۔ناگورنو کراباخ تنازعہ کے معاملے پر پاکستان آذربائیجان کے مؤقف کی حمایت کرتاہے۔پاکستان اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق ناگورنو کاراباخ کے تنازعہ کے حل چاہتا ہے۔سپیکر نے کہا کہ اسلام آباد میں قائم آذربائیجان کا مشن دونوں ممالک میں تجارتی حجم میں اضافے میں معاون ثابت ہو سکتاہے۔ ای سی او ممالک کی پارلیمانی تنظیم کو فعال بنا کر ای سی او ممالک میں مختلف شعبوں میں تعاون کو فروغ دیا جا سکتا ہے۔اس موقع پر آذربائیجان کے سفیر نے کہا کہ آذربائیجان پاکستان کے ساتھ اپنے دوستانہ، برادارنہ تعلقات کو اہمیت دیتا ہے،دونوں ممالک کے مابین دیرینہ تعلقات وقت کے ساتھ ساتھ مزید مستحکم ہو رہے ہیں۔ آذربائیجان مسئلہ کشمیر پر بھی پاکستان کے موقف کی بھرپور حمایت کرتا ہے اور کشمیر ی عوام کے ساتھ کھڑا ہے۔ آذربائیجان پاکستان کے ساتھ دوطرفہ تجارت میں اضافے کے علاوہ معاشی اور ثقافتی تعلقات کو مستحکم بنانا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک کے آپریشنل ہونے اور بڑھتے ہوئے علاقائی رابطوں سے دونوں ممالک کو تمام شعبوں میں تعاون کومواقع ملیں گے۔انہوں نے دونوں ممالک کے قانون ساز اداروں کے مابین تعاون کوبڑھانے کی تجویز سے اتفاق کیا اور دونوں ممالک میں پارلیمانی رابطوں کو فروغ دینے کیلئے دونوں ممالک کے اسپیکروں کی ویڈیو لنک کے ذریعے میٹنگ کی تجویزدی۔دونوں رہنماؤں نے زراعت، تجارت کی پارلیمانی کمیٹیوں میں رابطوں اور توانائی کے شعبے میں تعاون کو فروغ دینے پر بھی اتفاق کیا۔

علی علیزادہ 

مزید :

صفحہ آخر -