آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس، خورشید شاہ پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

   آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس، خورشید شاہ پر فرد جرم عائد نہ ہوسکی

  

سکھر(این این آئی)سکھر میں آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس, خورشید شاہ پر فرد جرم دوبارہ عائد نہ ہوسکی, نیب پراسکیوٹر کی سماعت ملتوی کرنے کی استدعا, نیب عدالت نے سماعت اٹھارہ ستمبر تک ملتوی کردی، تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سید خورشید شاہ, ان کے دو بیٹوں زیرک شاہ, ایم پی اے فرخ شاہ, داماد صوبائی وزیر اویس قادر شاہ اور دوبیگمات سمیت اٹھارہ افراد کے ایک ارب تئیس کروڑ روپے سے زائد کے اثاثے بنانے کے الزام میں نیب کے دائر کردہ ریفرنس کی سماعت سکھر کی نیب عدالت میں ہوئی سماعت پر پیپلزپارٹی رہنما خورشید شاہ کو این آئی سی وی ڈی اسپتال سے ایمبولینس پر عدالت لایا گیا سماعت کیموقع پر صوبائی وزیر اویس قادر شاہ, ایم پی اے فرخ شاہ ودیگر ملزمان بھی عدالت میں پیش ہوئے آج عدالت میں خورشیدشاہ سمیت دیگر ملزمان پر فرد جرم عائد کی جانی تھی لیکن سماعت کے آغاز پر ہی نیب پراسیکیوٹر نے عدالت سے استدعا کی کہ وہ طبیعت کی خرابی کی وجہ سے تیاری کرکے نہیں آسکے ہیں اور ریفرنس میں ابھی مزید ملزمان کے نام بھی شامل کرنے ہیں اس لییآج کی سماعت ملتوی کی جائے اور نئی تاریخ دی جائے عدالت نے نیب پراسکیوٹر کی درخواست پر سماعت اٹھارہ ستمبر تک ملتوی کردی واضح رہے کہ اٹھارہ ستمبر کا خورشید شاہ کی گرفتاری کو بھی سال مکمل ہوگا۔

خورشید شاہ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -