صدر ٹرمپ کا انداز ”بدمعاشوں“ جیسا اور سوچ نسل پرستانہ ہے، مائیکل کوہن

  صدر ٹرمپ کا انداز ”بدمعاشوں“ جیسا اور سوچ نسل پرستانہ ہے، مائیکل کوہن

  

  واشنگٹن (بیورو چیف) صدر ڈونلڈ ٹرمپ کیسابق وکیل مائیکل کوہن  نے الزام لگایا ہے کہ ٹرمپ کا انداز ”بدمعاشوں“ جیسا اور سو نسل پرستانہ ہے۔ وہ صدر ٹرمپ کی انتخابی مہم سے متعلق معاملات میں اپنے سابق باس کی انتخابی مہم میں مالیاتی ہیراپھیری پر مبنی جھوٹ اور غلط بیانیوں کے مرتکب ہونے کی بناء پر قید ہوئے تھے اور 24جولائی کو انہیں رہائی ملی تھی۔ مائیکل کوہن نے اپنی نئی کتاب میں صدر ٹرمپ پر سنگین الزامات لگائے ہیں۔  کتاب کے منظر عام پر آنے کے بعد وائٹ ہاؤس کی پریس سیکرٹری کیلی میکنانی نے ایک بیان میں ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے انہیں جھوٹا قرار دیا اور بتایا کہ انہیں جھوٹ بولنے ہی کی بناء پر عدالت سے سزا سنائی تھی۔ مائیکل کوہن نے ”بے وفا ایک یاداداشت“ کے عنوان سے یہ کتاب جیل میں رہنے کے دوران لکھی تھی۔ مائیکل کوہن نے ٹرمپ پر نسل پرستی کا الزام لگاتے ہوئے یہ بھی لکھا ہے کہ انہوں نے نیلسن منڈیلا اور ہسپانوی نسل کی اقلیت کی بھی حیثیت کو کم کرکے اپنے نسلی تعصب کا مظاہر کیا ہے۔ کتاب کے جواب میں وائٹ ہاؤس کی پریس سیکرٹری کیلی میکنانی نے مزید کہا کہ مائیکل کوہن ایک سزایافتہ فرد ہے جسے سزا کی بناء پر بطور وکیل پیش ہونے سے روک دیا گیا ہے۔ کتاب میں مائیکل کوہن نے لکھا ہے کہ دراصل مسٹر ٹرمپ ان جرائم کی خود مرتکب ہوئے ہیں جن کی بناء پر انہیں سزا ملی ہے وہ دھوکے بازجھوٹے اور فراڈیئے ہیں۔ وہ نسل پرستانہ سوچ رکھتے ہیں اور گینگ لیڈر جیسی ذہنیت رکھتے ہیں۔

ئیکل کوہن

مزید :

صفحہ اول -