” میں چھٹیاں گزارنے شمالی علاقہ جات گیا تھا “ مبینہ اغواءکے بعد واپس آنے والے ایس ای سی پی کے آفیسر کا پولیس کو حیران کن بیان

” میں چھٹیاں گزارنے شمالی علاقہ جات گیا تھا “ مبینہ اغواءکے بعد واپس آنے ...
” میں چھٹیاں گزارنے شمالی علاقہ جات گیا تھا “ مبینہ اغواءکے بعد واپس آنے والے ایس ای سی پی کے آفیسر کا پولیس کو حیران کن بیان

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )ایس ای سی پی کے جوائنٹ ڈائریکٹر ساجد گوندل کے اسلام آباد سے اچانک غائب ہونے کے معمے میں حیران کن موڑ اس وقت آیا جب وہ اچانک گزشتہ شب اپنے گھر پہنچ گئے تاہم اب انہوں نے پولیس کو بیان دے کر سب کو ورطہ حیرت میں ڈال دیاہے ۔

24 نیوز کی رپورٹ کے مطابق ساجد گوندل نے گھر آنے کے بعد اپنا بیان پولیس کو ریکارڈ کروا دیا ہے جس میں انہوں نے کہا کہ ” وہ اپنے دوستوں کے ساتھ تفریحی دورے پر شمالی علاقہ جات گئے تھے اور وہ اپنے اہل خانہ سے رابطہ اس لیے نہیں کر سکے کیونکہ ان کا موبائل فون بند ہو گیا تھا ۔“

بتایا گیاہے کہ ساجد گوندل کے واپس آنے کے بعد اب ایس ای سی پی کے حکام اب ان کا مجسٹریٹ کے روبرو سیکشن 164 کے تحت حتمی بیان ریکارڈ کروائیں گے ۔ساجد گوندل کی جانب سے جو دعویٰ کیا گیاہے وہ اس بات کے بالکل برعکس ہے کہ انہیں اغواءکیا گیا جیسا کہ ان کے اہل خانہ اور سول سوسائٹی کے لوگ واقعہ کے خلاف مسلسل سراپہ احتجاج رہے ۔

اس سے پہلے یہ رپورٹس میڈیا میں چل رہی تھیں کہ ساجد گوندل کو منگل کی شب اسلام آباد کے نواحی علاقے راوات کے قریب چھوڑا گیاہے جس کے بعد انہوں نے اپنے اہل خانہ سے رابطہ کرتے ہوئے خیریت کی اطلاع دی ۔ساجد گوندل کی اہلیہ سجیلہ گوندل نے رپورٹرز کو بتایا ہے کہ وہ سرگودھامیں اپنے آبائی گاﺅں جارہی ہیں ، گوندل سے ٹیلیفون پر بات ہوئی ہے لیکن اب فون دوبارہ بند جارہاہے ۔ ساجد گوندل کی اہلیہ نے اتنی بات کہی اور وزیراعظم عمران خان سمیت لاہور ہائیکورٹ اور میڈیا کا شکریہ ادا کیا ۔

تاہم بعدازاں یہ بتایا گیا کہ گوندل اپنے بھائی کی رہائشگاہ پر پہنچ گئے ہیں جہاں ایس پی فاروق امجد نے اپنی ٹیم کے ہمراہ دورہ کیا اور بتایا کہ وہ بالکل محفوظ ہیں ۔

یاد رہے کہ ساجد گوندل چار ستمبر کو اسلام آباد کے شہزاد ٹاو¿ن سے لاپتہ ہوگئے تھے جبکہ پولیس نے ا±ن کی گاڑی برآمد کرلی تھی۔اہل خانہ کے مطابق ساجد گوندل تین ستمبر کی شب اپنے گھر سے فارم ہاو¿س کے لیے روانہ ہوئے تھے اور واپسی کے لیے 9 بجے کا کہا تھا مگر وہ صبح تک واپس نہیں آئے تھے۔

دوسری جانب اہل خانہ نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں ساجد گوندل کی بازیابی کے لیے درخواست دائر کی تھی، عدالت نے دس روز کے اندر ایس ای پی کے افسر کو بازیاب کرنے کا حکم دیا تھا جبکہ سیکریٹری داخلہ کو ہدایت کی تھی کہ وہ عدالتی حکم وزیراعظم اور وفاقی کابینہ کو پیش کریں۔ وزیراعظم عمران خان نے کابینہ اجلاس میں ساجد گوندل کی گمشدگی اور باحفاظت واپسی کے لیے تین رکنی کمیٹی تشکیل دی تھی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -