سیماب پشت گرمیِ آئینہ دے ہے ہم

سیماب پشت گرمیِ آئینہ دے ہے ہم
سیماب پشت گرمیِ آئینہ دے ہے ہم

  

سیماب پشت گرمیِ آئینہ دے ہے ہم

حیراں کیے ہوئے ہیں دلِ بے قرار کے

آغوشِ گل کشودہ برائے وداع ہے

اے عندلیب چل! کہ چلے دن بہار کے

شاعر: مرزا غالب

Seemaab Pusht Garmi e Aaina Day Hay Ham

Hairaan Kiay Huay Hen Dil e Beqaraar K

Aaghosh e Gull Kashwada Baraa e Vidaa Hay

Ay Andaleeb Keh Chalay Din Bahaar K

Poet: Mirza Ghalib

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -