میری پہلی ترجیح ریاست کی رٹ قائم کرنا ہے ،حکومتی رٹ میں کوئی خلل ڈالے گا تو سختی سے نمٹا جائے گا،آئی جی پنجاب انعام غنی 

 میری پہلی ترجیح ریاست کی رٹ قائم کرنا ہے ،حکومتی رٹ میں کوئی خلل ڈالے گا تو ...
 میری پہلی ترجیح ریاست کی رٹ قائم کرنا ہے ،حکومتی رٹ میں کوئی خلل ڈالے گا تو سختی سے نمٹا جائے گا،آئی جی پنجاب انعام غنی 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)آئی جی پنجاب انعام غنی نے کہاہے کہ میری پہلی ترجیح ریاست کی رٹ قائم کرنا ہے ،حکومتی رٹ میں کوئی خلل ڈالے گا تو سختی سے نمٹا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ طارق مسعود میرے سینئر نہیں ،بیچ میٹ ہیں ،ہماراکام پالیسی پرعملدرآمدکرنا ہے ۔

آئی جی پنجاب انعام غنی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ اپنے گھرواپس آنے پر خوشی محسوس ہورہی ہے،مجھ پر اعتماد کرنے پر وزیراعظم اور وزیراعلیٰ کا مشکورہوں ،کوشش کروں گا اعتماد پر پورااتر سکوں،آئی جی پنجاب نے کہاکہ شعیب دستگیر کی بہترین ٹیم ہے ،سابق آئی جیز سے بہت کچھ سیکھنے کا موقع ملا،ہر افسر کی اپنی ترجیحات ہوتی ہیں ، میری پہلی ترجیح ریاست کی رٹ قائم کرنا ہے ،حکومتی رٹ میں کوئی خلل ڈالے گا تو سختی سے نمٹا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ قانون کی حکمرانی بہت ضروری ہے،مقدمات کی فری رجسٹریشن کی طرف جائیں گے ،پولیس کے رویے میں تبدیلی لانے کی کوشش کریں گے،قربانیوں کے باوجود لوگ ہم سے خوش نہیں ہیں ،لوگوں کی پولیس سے ناخوشی کی وجہ رویہ ہے، ریکروٹمنٹ اورپروموشن میں میرٹ لانے سے پولیس رویے میں تبدیلی آئے گی ،رویے میں تبدیلی سے ہماراعوام سے رابطہ مضبوط ہوگا۔

آئی جی پنجاب نے کہاکہ ڈی پی اوز کو تفتیش کی طرف لے کر جائیں گے،کوشش کریں گے کہ زیادہ سے زیادہ فنڈحاصل کریں ،تفتیش بہتر ہونے سے چیزیں بہتری کی طرف جائیں گی ،انہو ںنے کہاکہ وزیراعلیٰ سے ملاقات میں ترجیحات پر بات ہوئی ہے،ریاست کی بالادستی میری اوروزیراعلیٰ کی خواہش ہے،سی پی او سسٹم بہتر ہونے سے سینئر پولیس افسر بہتر کام کر سکیں گے ،تھانوں میں لوگوں کی تعیناتی میرٹ پر کریں گے۔

آئی جی پنجاب نے کہاکہ کرپشن کسی بھی صورت قابل قبول نہیں ہوگی ،عوام کو ہراساں کرنا کسی طور پر قابل قبول نہیں ،پولیس کی بدنامی والے کام روکنے کی کوشش کریں گے ،کسی سے بھی کوئی ایشو نہیں ہے،کسی پولیس افسر نے وفاقی یا صوبائی حکومت کیخلاف بات نہیں کی ۔

انہوں نے کہاکہ طارق مسعود میرے سینئر نہیں ،بیچ میٹ ہیں ،ہماراکام پالیسی پرعملدرآمدکرنا ہے ،حکومت نے پولیس میں بھرتی کی اجازت دے دی ہے ،پولیس افسران سیاسی دوستی کی خاطر اپنے فرائض سے پیچھے نہ ہٹیں ۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -