راشد لطیف بورڈ کے حالات دیکھ کر سائیڈ لائن ہوگئے ، ذکاءاشرف

راشد لطیف بورڈ کے حالات دیکھ کر سائیڈ لائن ہوگئے ، ذکاءاشرف

 لاہور( آن لائن ) پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین ذکاءاشرف نے کہا ہے کہ بگ فور کی آفر مجھے ہوئی تھی نجم سیٹھی کو ایسی کوئی آفر نہیں ہوئی ، بگ تھری پہ میں نے سٹینڈ لیا تھا ، جو بھی فیصلہ کیاتھا ملکی مفاد میں کیا چاہتا تھا پاکستان کی کرکٹ آگے جائے ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چوہدری ذکاءاشرف کا کہنا تھا کہ محمد حفیظ کو جذبات میں آکر استعفیٰ نہیں دینا چاہیے تھا وہ اکیلے اس کے ذمہ دار نہیں تھا تمام ذمہ داران کو احساس کرنا چاہیے تھا بطور کھلاڑی ٹیم میں رہنا اچھا فیصلہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میرے دور میں کھلاڑیوں کو بغیر اجازت میڈیا سے بات چیت کرنے پر پابندی تھی اور اس کے لئے باقاعدہ قوانین بنائے گئے تھے شاہد آفریدی کو اپنی پرفارمنس پر اعتماد ہونا چاہیے تھا پرفارمنس کی بیس پر وہ کپتان بن سکتے ہیں انہیں اس طرح میڈیا میں آکر اس طرح کی بات نہیں کرنا چاہیے تھی شوکاز نوٹس ملنا اچھا فیصلہ ہے ۔ راشد لطیف کے سلیکٹر نہ بننے کے حوالے سے ذکاءاشرف کا کہنا تھا کہ راشد لطیف دیانت دار آدمی ہیں انہوں نے جب بورڈ کے حالات اور معاملات دیکھے تو انہوں نے اپنے آپ کو کنارہ کش کرنا ہی بہتر سمجھا انہوں نے سوچا کہ بورڈ کے معاملات میں گندہ ہونے کی بجائے سائیڈ لائن ہی رہنا چاہیے ۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...