دو منہ والاسانپ لیکن پھر بھی زہر یلانہیں

دو منہ والاسانپ لیکن پھر بھی زہر یلانہیں
دو منہ والاسانپ لیکن پھر بھی زہر یلانہیں

  


نئی دہلی (نیوز ڈیسک) مغربی بنگال کے صوبے بردوان میں ایک ایسے انوکھے سانپ کی دریافت ہوئی ہے جس کے دو منہ ہیں، یہ گاؤں میں ایک گھر کے قریب سے گزر رہا تھا کہ ایک شخص نے اس کی تصویر کھینچ لی۔ لوگوں نے اسے پکڑنے کی کوشش کی لیکن یہ پھرتی سے رینگتا ہوا کھیتوں میں غائب ہوگیا۔ ماہرین کے مطابق یہ سانپ زہریلا نہیں ہے لہذا اگر اسے ’شریف‘ سانپ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا۔ مقامی دیہاتیوں کا کہنا ہے کہ بردوان کا علاقہ سانپوں کا گڑھ ہے لیکن عموماً یہ انسانوں کو نہیں کاٹتے البتہ جانوروں کے ڈسے جانے کے بعد چند واقعات سامنے آئے ہیں۔ مزید یہ کہ مقامی افراد اکثر سانپوں کی پوجا بھی کرتے ہیں اور ہندو مذہب میں ان کا درجہ بہت بلند ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...