دواساز کمپنی نے برطانوی عوام سے 80ارب ’لوٹ‘لئے

دواساز کمپنی نے برطانوی عوام سے 80ارب ’لوٹ‘لئے
دواساز کمپنی نے برطانوی عوام سے 80ارب ’لوٹ‘لئے

  


لندن (نیوز ڈیسک) جعلی ادویات کا کام صرف ترقی پذیر ممالک میں ہی نہیں ہوتا بلکہ ایک تازہ خبر کے مطابق سوئٹزرلینڈ کی ایک کمپنی نے برطانیہ کو جعلی دوائی فراہم کرکے 500ملین پاؤنڈ (قریباً 80 ارب روپے) کا چونا لگایا۔ تفصیلات کے مطابق 2009ء میں برطانیہ میں سوائن فلو کی وباء پھیلی تو ”روشے“ نامی سوئس کمپنی نے دعویٰ کیا کہ اس کی بنائی ہوئی دوا کے ذریعے اس بیماری کا علاج ممکن ہے۔ اس حوالے سے تحقیقاتی رپورٹیں بھی پیش کی گئیں۔ ان دعوؤں کی بنیاد پر برطانوی محکمہ صحت نے قریباً 424 ملین پاؤنڈ اس کی خریداری پر خرچ کر ڈالے۔ ”ٹامی فلو“ نامی یہ دوائی قریباً 240,000 لوگوں کو دی گئی۔ تاہم اب ایک غیر سرکاری تنظیم نے انکشاف کیا کہ اس دوائی کی کارکردگی صفر ہے۔ یہ سوائن فلو کے علاج میں معاؤنت نہیں کرتی بلکہ الٹا اسے استعمال کرنے والے کو ڈپریشن میں ڈال دکتی ہے۔ اس کے باعث جاپان میں آٹھ بچے خودکشی بھی کرچکے ہیں۔ اس کے علاوہ یہ گردوں کی بیماری، الٹی اور سردرد کا باعچ بھی بن سکتی ہے۔ برطانوی حکام کے ترجمان کا کہنا ہے کہ وہ اس نئی تحقیق کی روشنی میں اس حوالے سے آئندہ کے لائحہ عمل پر غور کررہی ہے۔

مزید : تعلیم و صحت


loading...