دوا کے نام پر ’کینسر‘کی فروخت

دوا کے نام پر ’کینسر‘کی فروخت
دوا کے نام پر ’کینسر‘کی فروخت

  


نیویارک (نیوز رپورٹ)لوگ دوا شفا حاصل کرنے کیلئے کھاتے ہیں لیکن جب دوا ہی مرض بن جائے تو اس کا کیا کیجئے۔ جاپانی کمپنی”ٹاکیدا“ کی جانب سے ذیابیطس کے علاج کے لئے بنائی گئی دوائی ”اکٹوز“ کا بھی یہی حال ہے۔ امریکی عدالت کے فیصلے کے مطابق یہ دوائی استعمال کرنے والوں میں کینسر کا سبب بنی اور جاپانی کمپنی نے دانستہ طور پر اس دوائی سے کینسر کے خطرات کو چھپا کر رکھا۔عدالت نے ”ٹاکیڈا“ کو 6ارب ڈالر اور س کی پارٹرکمپنی ”ای لیلی“ کو 3ارب ڈالرجرمانے کی سز اسنائی ہے۔ اسی طرح ”ٹرنس ایلن“نامی متاثرہ مریض کو 15لاکھ ڈالر ادا کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔ اس شخص کادعویٰ تھاکہ اس کمپنی کی دوا کے باعث اسے کینسر ہوا۔ اس دوا کے حوالے سے کمپنی پر 2700مقدمات دائر ہو چکے ہیں۔ دونوں کمپنیوں نے سزا کے فیصلے کیخلاف اپیل کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ شاید اپیل میں جرمانے کی رقم کم کردی جائے لیکن اس خبر نے صارفین کے اعتماد کو شدید ٹھیس پہنچائی ہے۔

مزید : تعلیم و صحت


loading...