وہ ویب سائٹ جو دنیا بھر کی نوجوان لڑکیوں کو بلیک میل کرنے لگی، پھنسانے کیلئے کیا شرمناک طریقہ اپنایا جاتا ہے؟ جان کر تمام لڑکیاں سوشل میڈیا پر کچھ بھی پوسٹ کرنے سے پہلے ہزار بار سوچیں

وہ ویب سائٹ جو دنیا بھر کی نوجوان لڑکیوں کو بلیک میل کرنے لگی، پھنسانے کیلئے ...
وہ ویب سائٹ جو دنیا بھر کی نوجوان لڑکیوں کو بلیک میل کرنے لگی، پھنسانے کیلئے کیا شرمناک طریقہ اپنایا جاتا ہے؟ جان کر تمام لڑکیاں سوشل میڈیا پر کچھ بھی پوسٹ کرنے سے پہلے ہزار بار سوچیں

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) سوشل میڈیا پر کا جادو نوجوان نسل کے سرچڑھ کر بول رہا ہے۔نوجوان، بالخصوص لڑکیاں، انٹرنیٹ پر دھڑادھڑ اپنی سیلفیاں پوسٹ کر رہی ہیں اور ایسا کرتے ہوئے وہ ایک لمحے کے لیے بھی نہیں سوچتیں کہ ان کہ تصاویر کا کس قدر غلط استعمال ہو سکتا ہے۔ایسی ہی خواتین کے لیے خبر ہے کہ امریکہ کی ایک ویب سائٹ سوشل میڈیا سے لڑکیوں کی تصاویر اٹھا کر اور ان میں تبدیلی کرکے لڑکیوں کو بلیک میل کر رہی ہے۔ یہ ویب سائٹ خود بھی لڑکیوں کے سر کے نیچے فحش فلموں کی اداکاراﺅں کے جسم لگا کر انہیں پوسٹ کرتی ہے اوراپنے صارفین کو بھی اس کی دعوت دیتی ہے۔

’میں اور میری بیگم اکٹھے رہتے ہیں لیکن پچھلے 4سال سے میں نے اسے ہاتھ بھی نہیں لگایا کیونکہ وہ۔۔۔‘ لاچار آدمی نے ایسی بات بتادی کہ سن کر تمام شوہر گھبراکررہ جائیں گے

رپورٹ کے مطابق 37سالہ برطانوی شخص اولیور وائٹنگ نے بھی درجنوں لڑکیوں کی تصاویر سوشل میڈیا سے چوری کیں اور ان میں تبدیلی کرکے اس ویب سائٹ پر پوسٹ کیں۔ اس بدطینت شخص نے دیگر لڑکیوں کے ساتھ ساتھ اپنی سوتیلی بہن شارلے ہف کی تصویر کو بھی تبدیل کرکے اس کے سر کے نیچے فحش فلموں کی اداکارہ کا جسم لگایا اور ویب سائٹ پر پوسٹ کرکے اس کے ساتھ لکھا کہ ”اس لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے کے عوض آپ کتنی رقم دے سکتے ہیں؟“

برطانوی پولیس نے اس ویب سائٹ کے خلاف کارروائی سے ہاتھ اٹھا دیئے ہیں۔ اس کا کہنا ہے کہ ویب سائٹ امریکہ سے چلائی جا رہی ہے چنانچہ وہ اس کے خلاف کچھ نہیں کر سکتے۔ یہ ویب سائٹ لڑکیوں سے قابل اعتراض تصاویر ہٹانے کے عوض 50ڈالر (تقریباً5ہزار روپے)تاوان وصول کرتی ہے۔ برطانوی پولیس نے ویب سائٹ کی انتظامیہ سے رابطہ کیا تھا اور ان سے درخواست کی تھی کہ وہ ان تصاویر کو ہٹا دے تاہم انہوں نے انکار کر دیا اور کہا کہ تاوان ادا کرو، پھر تصویریں ہٹائی جائیں گی۔ عدالت کی طرف سے مجرم اولیوروائٹنگ کو صرف 6ماہ معطل قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ وہ دو سال تک آزاد رہے گا جس کے بعد اسے 6ماہ کے لیے جیل بھیجا جا سکتا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -