سیدنا حضرت امیر معاویہؓ کا یوم وفات ملک بھر میں انتہائی عقیدت و احترام سے منایا گیا

سیدنا حضرت امیر معاویہؓ کا یوم وفات ملک بھر میں انتہائی عقیدت و احترام سے ...

لاہور (پ ر) کاتب وحی جلیل القدر صحابی ، پہلے اسلامی بحری بیڑے کے موجداورفاتح شام و قبرص سیدنا حضرت امیر معاویہؓ کا یوم وفات22 رجب المرجب کو ملک بھر میں انتہائی عقیدت و احترام سے منایا گیا سیدنا حضرت امیر معاویہؓ کے یوم وفات کے سلسلہ میں ملک کے تمام بڑے شہروں میں مختلف دینی و مذہبی جماعتوں اور تنظیموں نے جلسے ، سیمینار اور دیگر تقریبات منعقد کیں جس میں مقررین سیدنا حضرت امیر معاویہؓ کے فضائل و مناقب، سیرت و کردار اور ان کی بے مثال فتوحات پر روشنی ڈالتے ہوئے ان کو زبردست خراج عقیدت پیش کیا۔

مختلف دینی و مذہبی جماعتوں کے راہنماؤں مولانا عبدالرؤف فاروقی،مولانا محمد امجد خان،مولانا اسد اللہ فاروق،علامہ یونس حسن اور دیگر علماء نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیدنا حضرت امیر معاویہؓ کے آئینہ اخلاق میں اخلاص، علم و فضل، فقہ و اجتہاد، تقریر و خطابت، غریب پروری، خدمت خلق، ودیگر صفات اور خوف الٰہی کا عکس نمایاں نظر آتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سیدنا امیر معاویہؓ نے 19 سال تک 64 لاکھ مربع میل پر حکمرانی کی اور آپؓ کی بہن سیدہ اُم حبیبہؓ کو حضور اکرمﷺ کی زوجہ محترمہ اور اُم المؤمنین کا شرف حاصل ہے حضرت امیر معاویہؓ سے 163 احادیث نبوی مروی ہیں اور حضور ﷺ نے آپؓ کو کئی مرتبہ دعائیں اور بشارتیں دیں حضرت امیر معاویہؓ نے انتظامیہ کو بلند تر بنایا اور انتظامیہ کو عدلیہ میں مداخلت سے روکاسیدنا حضرت امیر معاویہؓ نے خلفائے راشدینؓ کے ترقیاتی کاموں کو جاری رکھتے ہوئے مزید ان امور کو فروغ دیا سیدنا امیر معاویہؓ نے سب سے پہلا اقامتی ہسپتال دمشق میں قائم کیا،سب سے پہلے اسلامی بحری بیڑہ قائم کیا اور جہاز سازی کے کارخانے بناتے ہوئے دنیا کی سب سے زبردست رومن بحریہ کو شکست دی ، آب باشی اور آب نوشی کے لیے دورے اسلامی میں پہلی نہر کھدوائی،ڈاکخانہ کی تنظیم نو کی اور ڈاک کے جدید نظام کو قائم کیا، سب سے پہلے سرکاری احکام پر مہر لگانے اور حکم کی نقل دفتر میں محفوظ رکھنے کا طریقہ ایجاد کیا، خط دیوانی ایجاد کیا اور رقوم کو الفاظ کی صورت میں لکھنے کا طریقہ پیدا کیا ، آپؓ نے دین اخلاق اور قانون کی طرح طب اورعلم الجراحت کی تعلیم کا انتظام کیا،آپؓ نے دین اخلاق اور قانون کی طرح طب اور علم الجراحت کی تعلیم کا انتظام بھی کیا، آپؓ نے بیت المال سے تجارتی قرضے بغیر اشتراک و نفع کے جاری کر کے تجارت و صنعت کو فروغ دیا اور بین الاقوامی معاہدے کیے، سرحدوں کی حفاظت کے لیے قدیم قلعوں کی مرمت کر کے اور چند نئے قلعے تعمیر کرا کر اس میں مستقل فوجیں متعین کیں، سیدنا حضرت امیر معاویہؓ کے دور میں ہی سب سے پہلے منجنیق کا استعمال کیا گیا ، انہوں نے کہا کہحضرت امیر معاویہ ؓ عظیم جرنیل اور اسلامی بحری بیڑے کے موجد ہیں پاک بحریہ میں نشان امیر معاویہؓ کا اعلان کیا جائے سیدنا امیر معاویہؓ کی روشن زندگی ،طرز حکمرانی اور بے مثال فتوحات آنے والے حکمرانوں کے مشعل راہ ہیں

مزید : میٹروپولیٹن 4