لیڈی ہیلتھ ورکرز کے بعد سکول اساتذہ بھی سراپا احتجاج 12اپریل کو دھرنے کی کال

لیڈی ہیلتھ ورکرز کے بعد سکول اساتذہ بھی سراپا احتجاج 12اپریل کو دھرنے کی کال

لاہور( ایجوکیشن رپورٹر) 12اپریل بروز جمعرات 12 بجے دن پنجاب سول سیکرٹریٹ کے سامنے سکول اساتذہ احتجاجی مظاہر ہ کریں گے اوردھرنا دیں گے ۔ مطالبات کی منظوری تک دھرنا جاری رہے گا۔ اساتذہ کو عزت دینے اور ان کے مسائل کے حل کے دعوے صرف کاغذی کارروائی کی حد تک ہیں۔محکمہ سکول ایجوکیشن کو غلط پالیسی سازوں نے تباہی کے راستے پر لگادیا ہے۔ بیوروکریسی کے رویہ کے خلاف احتجاج ناگزیر ہو گیا ہے۔ پنجاب بھر میں ہزاروں خالی آسامیوں پر سینئر اساتذہ کو ترقی نہیں دی جارہی اور اساتذہ کے لئے مختص آسامیوں پر بیوروکریسی قبضہ جمارہی ہے۔ اساتذہ کو تنگ کر کے محکمہ کی کارکردگی کو اعلی بنا کر وزیراعلی کے سامنے نمبربنائے جاتے ہیں۔ یونا ئیٹڈ ٹیچرز کونسل پنجاب کے مشاورتی اجلاس میں اس امر کا جائزہ لیا گیا کہ گذشتہ تین سالوں سے اساتذہ کی گریڈ17سے20 سمیت ہزاروں خالی آسامیوں پر من پسند جونیئر لوگوں کو لگایا گیا ہے۔اجلاس میں کنوینر طارق محمود، حافظ غلام محی الدین،اللہ بخش قیصر،محمد اجمل شاد،محمد اسلم گجر،محمد اشفاق نسیم،حافظ عبدالناصر، کاشف شہزاد چوہدری، آصف جاوید، محمد صدیق گل، محمد بلال اقبال کاموکا، ملک لطیف ندیم ، راو امرت خان، اعجاز حسین ، وحید مراد یوسفی اور محمد اختر کے علاوہ مقامی عہدیداران بھی شریک ہوئے ۔ حکام کی جانب سے غلط رپورٹ بنوا کر ہیڈز کے خلاف پیڈاایکٹ کے تحت انکوائریاں معمول بن چکی ہیں ۔ انکوائریوں کے حتمی فیصلے نہیں کئے جا رہے۔پنجاب کے ایک لاکھ سے زائد ایجوکیٹرز کی مستقلی میں بیوروکریسی رکاوٹیں ڈال رہی ہے۔ گزشتہ دس سال سے آئی ٹی ٹیچرز کو کمپیوٹر الاؤنس نہیں دیا جارہا۔ ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1