پنجاب یونیورسٹی وکیل کو جواب داخل کرنے کیلئے 23اپریل تک مہلت

پنجاب یونیورسٹی وکیل کو جواب داخل کرنے کیلئے 23اپریل تک مہلت

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی کے جیالوجی پروفیسر کی اسامی کو جیو فزکس میں تبدیل کرنے کے خلاف دائر درخواست پر پنجاب یونیورسٹی کے وکیل کو جواب داخل کرنے کیلئے 23 اپریل تک مہلت دے دی ۔جسٹس شجاعت علی خان نے ڈاکٹر شاہد غازی کی درخواست پر سماعت کی ،درخواست گزار کی طرف سے صفدر شاہین پیرزادہ ایڈووکیٹ پیش ہوئے ۔درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ سابق وی سی مجاہد کامران نیجیالوجیکل پروفیسر کی اسامی کو پروفیسر آف جیو فزکس میں تبدیل کیا ہے ،درخوست گزار کے وکیل نکتہ اٹھایا کہ وائس چانسلر متعلقہ ڈائریکٹر کی منظوری کے بغیر اسامی تبدیل نہیں کر سکتا ہے ،سابق وائس چانسلرمجاہد کامران نے من پسند امیدوار کو نوازنے کیلئے اسامی کی نوعیت تبدیل کی گئی ہے ،پنجاب یونیورسٹی میں پروفیسر آف جیالوجیکل کی اسامی کا بجٹ بھی جاری ہو چکا ہے ،دوران سماعت درخوست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ عدالت سے رجوع کرنے پر مجاہد کامران نے اسامی پر بھرتی کی کارروائی روک دی تھی جبکہ نئے قائم مقام وی سی نے بھرتی کا پراسس دوبارہ شروع کر دیا ہے، درخواست گزار نے عدالت سے استدعا کی کہ عدالت بوجہ عدم پیروی خارج کی گئی ،درخواست بحال کرنے کا حکم دے اور عدالت قائم مقام وائس چانسلر کو اسامی کی نوعیت تبدیل کرنے کی کارروائی روکنے کا حکم جاری کرے ،عدالت نے آئندہ سماعت پر وکلا کو بحث کے لیے طلب کر لی ہے۔

پنجاب یونیورسٹی

مزید : علاقائی