افغان فوج کی جانب سے طالبان کی منشیات لیبارٹریوں پر حملوں میں تیزی آگئی 

افغان فوج کی جانب سے طالبان کی منشیات لیبارٹریوں پر حملوں میں تیزی آگئی 
افغان فوج کی جانب سے طالبان کی منشیات لیبارٹریوں پر حملوں میں تیزی آگئی 

  

کابل(این این آئی)افغان فورسز نے طالبان کے زیرنگرانی چلنے والی منشیات کی لیبارٹریوں پر فضائی حملوں میں وسعت پیدا کر دی ہے۔ 

میڈیارپورٹس کے مطابق افغان حکام نے ایک نئی حکمت عملی کے تحت افیون کی فصلوں کو نشانہ بنانے کی مہم شروع کر رکھی ہے۔ گزشتہ برس افغانستان میں افیون کی پیداوار میں 87 فیصد اضافہ ہوا تھا۔امریکی حکام کا کہنا ہے کہ افیون کے ان کھیتوں میں سے زیادہ تر طالبان کے زیرقبضہ علاقوں میں واقع ہیں اور طالبان ہی منشیات کی تجارت کی بھی نگرانی کرتے ہیں۔ افغانستان میں امریکی فوج کی تعداد میں کمی کے بعد ملک کے متعدد علاقوں میں طالبان نے اپنا اثرورسوخ بڑھایا ہے اور اب افیون کی فصلوں کے حامل علاقوں میں خاصا اضافہ ہوا ہے۔

امریکی فورسز نے افغانستان کی فوج کے ساتھ مل کر مغربی صوبے فرح اور نمروز میں طالبان کے زیرقبضہ 11 ایسے مقامات کو نشانہ بنایا ہے جہاں منشیات کی پیداوار جاری تھی۔ یہ پہلا موقع تھا کہ مغربی افغان علاقوں میں اس انداز کے فضائی حملے کیے گئے ہیں جبکہ ان کارروائیوں کا مقصد طالبان کی آمدن کے مرکزی ذرائع کو نقصان پہنچانا ہے۔

مزید : بین الاقوامی