قصور سے اب تک کی سب سے شرمناک ترین خبر آگئی، کیا کام کردیا گیا؟ جان کر ہر پاکستانی کی آنکھوں میں آنسو آجائیں گے

قصور سے اب تک کی سب سے شرمناک ترین خبر آگئی، کیا کام کردیا گیا؟ جان کر ہر ...
قصور سے اب تک کی سب سے شرمناک ترین خبر آگئی، کیا کام کردیا گیا؟ جان کر ہر پاکستانی کی آنکھوں میں آنسو آجائیں گے

  

قصور (مانیٹرنگ ڈیسک) پنجاب کے بدقسمت شہر قصور میں کیا کچھ نہیں ہو چکا لیکن مجال ہے کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے لرزہ خیز جنسی جرائم کو روکنے میں معمولی سی بھی سنجیدیدگی دکھائی ہو۔ ہاں دعوے بہت بڑے بڑے کئے گئے، مگر ان دعووں میں کچھ سچائی ہوتی تو حالات میں بھی کچھ تبدیلی ضرور آتی۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

ویب سائٹ Dawn.com کے مطابق گزشتہ ہفتے اور اتوار کے روز صرف دو دنوں میں چھ کمسن بچوں کو درندہ صفت مجرموں نے ہوس کا نشانہ بناڈالا۔ ایک بچہ دو ہفتے سے لاپتہ ہے لیکن پولیس اس کا سراغ نہیں لگاپائی۔ قصور کی موبائل فون شاپس پر بچوں کے ساتھ جنسی جرائم کی ویڈیوز بھی بدستور محض چند روپوں کے عوض بیچی جا رہی ہیں۔ ان باتوں سے بخوبی اندازہ کیا جا سکتا ہے کہ شہر میں حالات کیسے ہیں اور صورتحال کس طرف جا رہی ہے۔

ہفتے کی شام چار ملزمان نے عید گاہ گراﺅنڈ مصطفی آباد میں کبڈی کا میچ دیکھ کر واپس آنے والے دو بچوں کو اغوا کر لیا اور کھیتوں میں لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنایا۔ مغوی بچوں میں سے ایک فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا جس کے بتانے پر اہل علاقہ نے کھیتوں میں جا کر دوسرے بچے کو نازک حالت میں بازیاب کروایا۔ اتوار کے روز ایک حجام نے ایک 12 سالہ بچی کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، جبکہ گاﺅں باٹھ کلاں میں ایک اوباش نوجوان نے پانچ سالہ بچے کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔

ڈی پی او قصور کا کہنا تھا کہ پولیس نے 20 ہزار سے زائد افراد کے ڈی این اے کا پروفائل بینک قائم کرلیا ہے تاکہ مستقبل میں ہونے والے جرائم کے ذمہ داران کا پتہ چلانے میں آسانی ہو۔ اتوار کے روز قصور، الہ آباد، پھولنگر اور کھڈیاں پولیس نے درجنوں دکانداروں کو گرفتار کیا اور ان کے لیپ ٹاپس اور موبائل فونز سے فحش ویڈیوز برآمد کرنے کے بعد دفعہ 293 کے تحت ان کے خلاف مقدمات درج کئے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /جرم و انصاف /علاقائی /پنجاب /قصور