پاکستان موبائل صارفین کی معلومات انٹرنیٹ پر لیک ہوگئی،انتہائی تشویشناک خبرآگئی

پاکستان موبائل صارفین کی معلومات انٹرنیٹ پر لیک ہوگئی،انتہائی تشویشناک ...
پاکستان موبائل صارفین کی معلومات انٹرنیٹ پر لیک ہوگئی،انتہائی تشویشناک خبرآگئی

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان میں سائبر سکیورٹی کی نمایاں فرم ریوٹرزنےانکشاف کیا ہے کہ پاکستان کے گیارہ کروڑ پچاس لاکھ لوگوں کا ڈیٹا ایک ڈارک ویب پر فروخت کیلئے پیش کیاگیاہے۔

یہ ڈیٹا فروخت کیلئے پیش کرنے والے ملزموں نے اس کی قیمت اکیس لاکھ ڈالر یعنی ساڑھے تین کروڑ پاکستانی روپے سے زیادہ بتائی ہے۔

پاکستانیوں کا ڈیٹا ڈارک ویب پر فروخت ہونا اس بات کا ثبوت ہے کہ پیسوں کیلئے کچھ عناصر یہاں متحرک ہیں اور وہ پاکستان اور یہاں موجود اداروں کیلئے خطرہ بن رہے ہیں۔

ٹیک جوس کی رپورٹ کے مطابق ریوٹرز تھریٹ انٹیلی جنس ٹیم نے جو جائزہ لیا ہے اس کے مطابق ایک معروف ویب پر پاکستانیوں کا مکمل نجی ڈیٹا فروخت کیلئے پیش کیاگیا ہے جس میں پاکستانیوں کے شناختی کارڈ نمبرز، مکمل نام ، پتہ، فون نمبرز اور ٹیکس نمبرز بھی شامل ہیں۔

رپورٹ کے مطابق سائبر کریمنلز نے یہ ڈیٹا ڈارک ویب کے وی آئی پی نمبر پر فروخت کیلئے پوسٹ کیا ہے اور یہ ڈیٹا بالکل فریش ہے کیونکہ اسے رواں ہفتے ہیک کیا گیاہے اور مسلسل اپ ڈیٹ کیاجارہا ہے۔ ڈیٹا کی فروخت کیلئے لگائے گئے اشتہار پر بتایا گیا ہے کہ اسے خوبصورت انداز سے منظم کیاگیاہے اور اس پرہیڈرز بھی لگائے گئے ہیں۔

ریوٹرز تھریٹ انٹیلی جنس کا کہنا ہے کہ ڈیٹا کی فروخت سے ٹیلی کام کمپنیوں کی ڈیٹا سکیورٹی اور پرائیویسی پالیسیز کے حوالے سے کئی سوالات جنم لیتے ہیں۔ ممکن ہے یہ ڈیٹا مختلف کمپنیوں سے چرایا گیا ہو تاہم یہ بھی ممکن ہے کہ یہ کسی ایک فرم سے حاصل کیاگیاڈیٹاہو۔

تاحال کوئی ایسی کمپنی بھی سامنے نہیں آئی جس پر کسی قسم کا کوئی سائبر حملہ ہوا ہو۔اگر ایساکوئی واقعہ ہوا ہے تو صارفین کو مطلع کرنا بے حد ضروری ہے۔ رپورٹ کے مطابق اس بات کا بھی امکان ہے کہ خود کمپنیاں ہی اس قابل نہ ہوں  کہ انہیں ڈیٹا ہیک ہونے کا پتہ بھی نہ چلاہو اس وقت یہ صارفین کی فکرمندی کا وقت ہے جن کا ڈیٹا لیک ہوا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ریوٹرز تھریٹ انٹیلی جنس ڈیپ اور ڈارک ویب فورمز کو مانیٹر کرتی رہتی ہے اور اس حوالے سے مزید اپ ڈیٹ کرتا رہے گا۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجی -