جنوبی کوریا میں کورونا کی چوتھی لہر کے خطرے منڈلانے لگے

جنوبی کوریا میں کورونا کی چوتھی لہر کے خطرے منڈلانے لگے
جنوبی کوریا میں کورونا کی چوتھی لہر کے خطرے منڈلانے لگے

  

سیﺅل (رضا شاہ) جنوبی کوریا کے صحت کے ماہرین کے مطابق کوریا میں کوویڈ 19 انفیکشن کی چوتھی بڑی لہر کا آغاز ہو رہا ہے۔ ملک بھر میں کورونا کے کیس پچھلے تین مہینوں کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکے ہیں۔

 کوریا کی بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کی ایجنسی (کے ڈی سی اے) کے مطابق ملک میں روزانہ سات سو کے لگ بھگ نئے کیس رپورٹ ہو رہے ہیں جس کی وجہ سے اب تک کورونا کیس بڑھ کر ایک لاکھ دس ہزار کے قریب جا پہنچے ہیں۔ طبی ماہرین کے مطابق کوریا میں کرونا کی چوتھی لہر کا آغاز ہو چکا ہے اور اگر حکومت نے سماجی فاصلے اور عوام کی بیرونی سرگرمیوں پر سخت احکامات لاگو نہ کیے تو روزانہ کے مثبت کیس ایک ہزار سے زیادہ ہو سکتے ہیں۔ ایک سال سے کورونا وائرس کی وجہ سے گھروں میں بند عوام موسم کے گرم ہونے کی وجہ سے پہلے کی نسبت بہت زیادہ باہر نکل رہے ہیں۔ وزیرِ صحت و بہبود “گوون دوک چھول” نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ روزانہ کے کیسوں میں کمی کی وجہ سے ہم نے سماجی فاصلے اور دوسرے احتیاطی احکامات میں نرمی کی تھی لیکن کچھ کاروباری اور صنعتی ادارے قواعد پر عمل پیرا ہونے میں ناکام رہے ہیں جس کی وجہ سے کورونا کیسوں میں تیزی سے اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -