دینی جماعتوں اور وفاق المدارس کا رمضان المبارک میں کسی قسم کی حکومتی پابندیاں قبول کرنے سے انکار 

دینی جماعتوں اور وفاق المدارس کا رمضان المبارک میں کسی قسم کی حکومتی ...
دینی جماعتوں اور وفاق المدارس کا رمضان المبارک میں کسی قسم کی حکومتی پابندیاں قبول کرنے سے انکار 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )وفاق المدارس العربیہ پاکستان ، مختلف مذہبی اور سیاسی جماعتوں،دینی مدارس کے منتظمین اورمساجد کےائمہ و خطبا نے مشترکہ اعلامیہ میں کہاہے کہ ماہ رمضان میں مساجدکھلی رہیں گی اورتراویح واعتکاف سمیت دیگر عبادات کے حوالے سے کسی قسم کی کوئی پابندی قبول نہیں کی جائے گی۔

وفاق المدارس العربیہ پاکستان کی دعوت پر مختلف مذہبی اور سیاسی جماعتوں،دینی مدارس کے منتظمین اور مساجد کے ائمہ و خطبا کا ہنگامی اجلاس دارالعلوم زکریا میں مولانا قاضی عبدالرشید کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں موجودہ صورتحال پر غور و خوض کے بعد مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا جس میں واضح طور پر اعلان کیا گیا کہ ماہ رمضان میں مساجد کھلی رہیں گی اورتراویح و اعتکاف سمیت دیگر عبادات کے حوالے سے کسی قسم کی کوئی پابندی قبول نہیں کی جائے گی ۔

علما کرام نے کہا کہ مساجد و مدارس میں ضروری احتیاطی تدابیر پر عمل کیا جاتا ہے لیکن کسی قسم کی ناروا پابندیاں یا دینی سلسلوں میں کوءرکاوٹ قطعا قابل قبول نہیں,اجلاس کے شرکا نے وقف ایکٹ کے حوالے مختلف مساجد ومدارس میں سرکاری اہلکاروں کی آمد اور کوائف ناموں کی تقسیم کو طے شدہ معاہدوں کی خلاف ورزی اور اعتماد کی فضا کو خراب کرنے کی سازش قرار دیا۔

اعلامیہ میں وفاق المدارس اور اتحاد تنظیمات مدارس کےساتھ معاملات طےکیے بغیر کسی قسم کےکوائف جمع نہ کروانے اور سرکاری اہلکاروں کے ساتھ تعاون نہ کرنے کا اعلان کیا گیا,اجلاس کے مشترکہ اعلامیہ میں غیر آئینی اور غیر شرعی وقف ایکٹ کی واپسی تک جدوجہد جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا گیا اور عید کے تمام اضلاع,چاروں صوبائی مقامات اور بعد ازاں وفاقی دارالحکومت میں احتجاجی اجتماعات کے انعقاد کا بھی اعلان کیا گیا۔مشترکہ اجلاس میں اس بات کی ضرورت پر زور دیا گیا کہ صرف طبی احتیاطی تدابیر پر ہی اکتفا نہ کیا جائے بلکہ روحانی احتیاطی تدابیر پر بھی عمل کیا جائے اور عوام الناس میں خوف و ہراس اور مایوسی پھیلانے کے بجائے رجوع الی اللہ کا درس دیا جائے۔

اجلاس کے دوران مولانا قاضی عبدالرشید کی سرپرستی اور مولانا مفتی اویس عزیز کی سربراہی میں پندرہ رکنی ایکشن کمیٹی بھی بنائی گئی جو مساجد ومدارس کے معاملات میں ائمہ و خطبا اور اہل مدارس کے ساتھ رابطے میں رہے گی اور کسی قسم کے ناخوشگوار صورتحال میں حکمت عملی طے کرے گی۔اجلاس کے شرکا نے وفاق المدارس کی مرکزی قیادت اور اکابر علما کرام کی طرف سے ملنے والی ہدایات کے مطابق جملہ معاملات کو آگے بڑھانے کا عہد کرتے ہوئے کہا کہ اسلام اور مذہبی اعمال کے خلاف کسی قسم کی سازش ناقابل برداشت ہے۔

مزید :

قومی -